سندھ میں پیپلزپارٹی کے پانچ سالہ دور حکومت میں جرائم کی شرح میں کوئی کمی نہیں آئی،خرم شیر زمان

جمعہ جون 18:59

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 01 جون2018ء) پاکستان تحریک انصاف کراچی کے جنرل سیکریٹری و سندھ اسمبلی میں پی ٹی آئی کے سابق پارلیمانی لیڈرخرم شیر زمان نے کہا ہے کہ سندھ میں پیپلزپارٹی کے پانچ سالہ دور حکومت میں جرائم کی شرح میں کوئی کمی نہیں آئی۔ سندھ پولیس کے پاس قابل پولیس افسران کی شدید کمی ہے جس کے باعث کیس کی تحقیقات ٹھیک طریقے سے نہیں ہوپاتیں اور شک کا فائدہ اٹھا کر مجرم عدالت سے رِہا ہوجاتے ہیں۔

وزارتِ داخلہ کی نااہلی کے باعث انسدادِ دہشتگردی کی عدالتیں پانچ سال میں کوئی خاص کارکردگی پیش نہیں کرسکیں ۔انسدادِ دہشت گردی ڈیپارٹمنٹ کی معلومات کے مطابق دو ہزار اٹھارہ کے پہلے چارماہ میں انسدادِ دہشتگردی کی عدالتوں میں سندھ بھر میں درج دو ہزار سات سو چوہترکیسز میں سے صرف تیرہ اعشاریہ پچانوے فیصد پر کام ہوا۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ ان پانچ سالوں میں پی پی کی وزارتِ داخلہ کی کارکردگی شرمناک اور قابل رحم حدتک مایوس کن رہی ہے۔

انسدادِ دہشت گردی ڈیپارٹمنٹ نے خود تسلیم کیا ہے کہ قابل اور پروفیشنل انویسٹی گیشن آفیسرز کی کمی کے باعث عدالت میں کیس کی مناسب پیروی نہیں ہوپاتی جس کا فائدہ دہشتگردوں اور مجرموں کو ملتا ہے ۔۔سندھ حکومت نے پانچ سال میں سیکورٹی پولیس اور عدالتوں کے نام پر اربوں روپے خرچ کئے مگر پی پی حکومت اور وزارت داخلہ نے پولیس کے نظام کو بہتر کرنے کے لیے سوائے زبانی جمع خرچ کے اور کچھ نہیں کیا۔ وزارتِ داخلہ نے پولیس افسران کی قابلیت اور صلاحیتوں میں اضافے کے لیے بھی کچھ نہیں کیا۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی نے خیبرپختونخوا ہ میں پولیس کے نظام کوجس طرح اپ ڈیٹ کیا ہے اسی طرح سندھ میں بھی کریں گے۔