یوگنڈا میں سوشل میڈیا سائٹس پر فضول گفتگو روکنے کیلئے ٹیکس نافذ

جمعہ جون 19:25

لندن (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 01 جون2018ء) افریقی ملک یوگنڈا کی پارلیمنٹ نے فیس بک سمیت دیگر سوشل میڈیا سائٹس پر فضول گفتگو روکنے کے لیے ٹیکس نافذ کرنے کا اعلان کر دیا۔برطانوی نیوز ویب سائٹ بی بی سی کی رپورٹ کے مطابق یوگنڈا کی حکومت نے فیصلہ کیا ہیکہ سوشل میڈیا ایپس یعنی فیس بک،، واٹس ایپ، وائبر، ٹوئٹر اور دیگر کو روزانہ استعمال کرنے والے افراد کو 4 سے 5 سینٹ ٹیکس ادا کرنا ہوگا۔

یوگنڈا کے صدر یوویری موسوینی کا کہنا ہے کہ سوشل میڈیا،، گپ شپ اور فضول افواہوں کو فروغ دیتا ہے اس کی روک تھام کے لیے ٹیکس عائد کیا گیا ہے جس کا اطلاق یکم جولائی سے شروع ہوگا۔موسوینی نے کہا کہ یہ ٹیکس انٹرنیٹ ڈیٹا کی بجائے صرف سوشل میڈیا ایپس پر لاگو ہوگا کیونکہ انٹرنیٹ تعلیم و تحقیق کے شعبے میں مددگار ثابت ہے۔

(جاری ہے)

علاوہ ازیں پارلیمنٹ کے نئے بل کے تحت موبائل ٹرانزکشنز پر بھی ایک فیصد ٹیکس لاگو ہوگا جس پر شہریوں نے غصے کا اظہار کرتے ہوئیکہا ہے کہ اس سے غریب طبقہ متاثر ہوگا جو روزانہ موبائل بینکنگ استعمال کرتا ہے۔

یوگنڈا حکومت کی جانب سے تمام سم کارڈز کی رجسڑیشن بھی چیک کی جارہی ہے آیا کہ وہ باقاعدہ رجسٹرڈ ہیں یا نہیں۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق یوگنڈا میں 23.6 ملین افراد کے پاس موبائل فونز ہیں جن میں 17 ملین افراد انٹرنیٹ استعمال کرتے ہیں۔اب تک یہ معلوم نہیں کیا جاسکا ہے کہ کس طریقے سے صرف سوشل میڈیا استعمال کرنے والے صارفین کی پہچان کی جاسکے گی۔