بیوروکریسی وفاقی ڈیلی ویجز اساتذہ و سٹاف کی مستقلی کی راہ میں رکاوٹ ہے، سینٹ قائمہ کمیٹی

خواتین اساتذہ کی پروموشن کیلئے دفتری اوقات کے بعد کی کارروائی قابل مذمت پرائیویٹ سکولوں کی چھٹیوں میں بھی فیس وصولی ،وضاحت کیلئے (پیرا) حکام طلب

جمعہ جون 20:20

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 01 جون2018ء) سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے کیڈ نے وفاقی نظامت تعلیمات کے ڈیلی ویجز اساتذہ و سٹاف کی مستقلی کی راہ میں بیوروکریسی کو رکاوٹ قرار دیتے ہوئے ایف ڈی ای کی بالخصوص خواتین اساتذہ کی پروموشن کے لئے دفتری اوقات کے بعد کی کارروائی کو قابل مذمت قرار دیتے ہوئے پرائیویٹ سکولوں کی طرف سے چھٹیوں کے دورانیہ میں بھی فیس وصول کرنے کے عمل پر وضاحت کیلئے (پیرا) حکام کو طلب کر لیا ہے۔

جمعہ کو کمیٹی کا اجلاس چیئرمین کمیٹی سینیٹر ڈاکٹر اشوک کی زیر صدارت پارلیمنٹ ہاؤس میں منعقد ہوا۔کمیٹی کو بریفنگ دیتے ہوئے چیئرمین سی ڈی اے نے بتایا کہ شہر میں پانی کی ضرورت کو پورا کرنے کی ذمہ دار میونسپل کارپوریشن کے پاس ہے تاہم سی ڈی اے پانی کے بحران کے خاتمے کیلئے بڑے منصوبوں کی مد میں ایم سی آئی سے تعاون کر رہا ہے۔

(جاری ہے)

رمضان المبارک میں اشیاء ضروریہ کی قیمتوں میں من پسند اضافے اور سستے اور ہفتہ وار بازاروں میں غیر معیاری اشیاء کی فروخت پر ڈائریکٹر ڈی ایم اے نے کمیٹی کو بتایا کہ ابھی تک ڈی ایم اے کو اس طرز کی کوئی تحریری شکایت موصول نہیں ہوئی ہے ۔

ڈی ایم اے کا عملہ تمام ہفتہ وار اور سستے بازاروں میں ڈیوٹی پر موجود رہتا ہے کسی بھی شکایت یا گراں فروشی کی نشاندہی پر جرمانے کئے جاتے ہیں ۔ ایف ڈی ای کے ڈائریکٹر ماڈل کالجز نے ایف ڈی ای کی کے امور پر کمیٹی کو بریفنگ دی جس عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کمیٹی ممبران کا کہنا تھا کہ دونوں وزیر اعظم نے ڈیلی ویجز کی مستقلی بارے ہدایات دیں تاہم ڈیلی ویجز ملازمین کی مستقلی کی راہ میں بیوروکریسی آڑے آ گئی ۔

سینیٹر کلثوم پروین نے ایک موقع پر کہا کہ خواتین اساتذہ کی پروموشن کے لئے شام چار بجے کے بعد کیا کچھ ہوتا ہے وہ نہ صرف قابل مذمت ہے بلکہ قابل گرفت بھی ہے ۔ پرائیویٹ تعلیمی اداروں کی طرف سے گرمیوں کے چھٹیوں کے دورانیہ کی فیس وصول کے عمل پر کمیٹی نے پیرا حکام کو اگلی میٹنگ میں طلب کر لیا ہے کمیٹی ممبران نے اسلام آباد اور گن اینڈ کنٹری کلب کے معاملات پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے اسلام آباد کلب کو ایک دوکان قرار دیا ہے سینیٹر کلثوم پروین نے اس موقع پر کہا کہ ان دونوں کلبوں کے معاملات کی بہتری کے لئے سینیٹر اعظم سواتی کی طرف سے لائے گئے بلوں کی حمائیت کی جائے گی۔

اس موقع پر اراکین کمیٹی سینیٹر محمد یوسف بادین ، محمد اسد علی خان جونیجو ص، مشاہد حسین سید ، سردار شفیق ترین ، سعدیہ عباسی ، کلثوم پروین ، سجاد حسین طوری علاوہ سیکرٹری ایڈیشنل ، سیکرٹری کیڈ ، چیئرمین سی ڈی اے ، ایف ڈی ای اور پی ایم ایجوکیشن ریفارم پروگرام کے عملے نے شرکت کی ۔ ۔