اوچ پاور پلانٹ سے نصیرآباد ڈویژن کے تین اضلاع اور سبی کو بجلی فراہمی منصوبے میں کروڑوں روپے کرپشن کا انکشاف

نئی تعمیرہونے والی گرڈاسٹیشنوں کی عمارتوں میں ایرکینڈیشنر فرنیچرز کا کوئی نشان موجود نہیں ہے چار سو نو کروڑ واپڈاکے منصوبے میں 220کے وی گرڈ اسٹیشن ڈیرہ مراد جمالی روجھان جمالی اور اوستہ محمد جھل مگسی ک 66 کے وی گرڈ اسٹیشنوں کو اپ گریڈ اورسبی ڈبل سرکٹ لائن بچھائی شامل ہے

جمعہ جون 20:49

ڈیرہ مراد جمالی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 01 جون2018ء) اوچ پاور پلانٹ سے نصیرآباد ڈویژن کے تین اضلاع اور سبی کو بجلی فراہمی منصوبے میں کروڑوں روپے کی بے لگام کرپشن کا انکشاف گرڈ اسٹیشنوں میں نی26۔20کے ہائی ٹرانسفارمرزجدید نئے لگانے کے بجائے پرانے لگانے کا انکشاف جبکہ نئی تعمیرہونے والی گرڈاسٹیشنوں کی عمارتوں میں ایرکینڈیشنر فرنیچرز کا کوئی نشان موجود نہیں ہے چار سو نو کروڑ واپڈاکے منصوبے میں 220کے وی گرڈ اسٹیشن ڈیرہ مراد جمالی روجھان جمالی اور اوستہ محمد جھل مگسی ک 66 کے وی گرڈ اسٹیشنوںکو اپ گریڈ اورسبی ڈبل سرکٹ لائن بچھائی شامل ہے تفصیلات کے مطابق واپڈا نے ایشن ڈولمپنٹ بنک کے قرضے سے نصیرآباد ڈویژن کے تین اضلاع نصیرآباد جعفرآباد جھل مگسی اور سبی کو اوچ پاور پلانٹ ٹو سے بجلی فراہم کرنے کیلئے چار ارب نوے کروڑ کی خطیر رقم سے منصوبے شروع کیئے جن میں ایک عد د 220 کے وی گرڈ اسٹیشن جبکہ ڈیرہ مراد جمالی روجھان جمالی اور اوستہ محمد جھل مگسی کے 66کے وی گرڈ اسٹیشنوںکو اپ گرڈ کرکے 132کے وی گرڈ اسٹیشن اور سبی کیلئے ڈبل سرکٹ لائنیں بچھائی کی جانی تھی گزشتہ روز واپڈ ا کے شعبہ جی ایس سی کی جانب سے منصوبے کے پہلے ڈیرہ مراد جمالی کے 132کے وی گرڈ اسٹیشن کو اسٹارٹ کیا گیا جس میں قلعہ عبداللہ اور مسلم باغ کے پرانے گرڈ اسٹیشن سے نکالے گئے دو 20۔

(جاری ہے)

26کے ہائی ٹرانسفارمرز لگانے کا انکشاف ہوا ہے ایک ٹرانسفارمرز میں تیل بھی موجود نہیں تھا گرڈاسٹیشن ڈیرہ مراد جمالی 132کے وی میں لگائے گئے ٹرانسفارمر سے دھوئے کے بادل نکلنے لگے ہیں آٹھ فیڈر ٹرپ ہونے لگے جبکہ جی ایس سی کی جانب سے نئی تعمیر ہونے والی گرڈ اسٹیشن کی بلڈنگوں کیلئے ضروری سامان بھی فراہم نہیں کیا گیا ہے اور نہ ہی کروڑوں روپے کی جدید مشنیری کو ٹھنڈا رکھنے کیلئے ایرکنڈیشن لگائے گئے ہیں نصیرآباد کے سیاسی سماجی حلقوں اور تین جماعتی اتحاد کے سربراہ عبدالحکیم انقلابی نے کہاکہ اوچ پاور پلانٹ ٹو سے بجلی منصوبے میں کروڑوں روپے کی کرپشن اور پرانے ٹرانسفارمر لگانے کسی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا واپڈا اپنے شعبہ جی ایس سی کو معیاری میڑیل استعمال کرنے کی ہدایت کرے بصورت احتجاج کیا جائے گا اور فوری طور پر دوسراے ٹرانسفارمر سے نکالا گیا لاکھوں روپے کا تیل ڈال کر چلایا جائے ۔

رضوان شاہ)