پشاور:قومی اسمبلی میں خیبر پختونخوا سے خواتین کی 9 مخصوص ، صوبائی اسمبلی میں خواتین کی 22اور غیر مسلموں کی 3نشستوں پر انتخاب کے سلسلے میں امیدواروں کے لئے ضروری ہدایات جاری

جمعہ جون 20:50

پشاور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 01 جون2018ء) قومی اسمبلی میں خیبر پختونخوا سے خواتین کی 9 مخصوص ، صوبائی اسمبلی میں خواتین کی 22اور غیر مسلموں کی 3نشستوں پر انتخاب کے سلسلے میں امیدواروں کے لئے ضروری ہدایات جاری کردی گئیں۔جس کے مطابق مخصوص نشت پر کاغذات نامزدگی فارم صوبائی الیکشن کمشنر کے دفتر سے مبلغ 100/- روپے فیس کی ادائیگی پر دستیاب ہے،تمام امیدواروں کو کاغذاتِ نامزدگی فارم ریٹرننگ آفیسر کے دفتر میں صبح 8:00 بجے سے 4:00 بجے تک جمع کروائے جا سکتے ہیں ، فارم کے ساتھ ایک عدد پاسپورٹ سائزتصویر، اُمیدوار ،تایئد کنندہ، تجویز کنندہ کے قومی شناختی کارڈ کی تصدیق شدہ نقول و ووٹ کی اصل سرٹیفیکٹ ، جو کہ متعلقہ ضلع کے ڈسٹرکٹ الیکشن کمشنر کی طرف سے جاری ہوئی ہوکو منسلک کرنا ضروری ہے،فیس برائے صوبائی اسمبلی Rs.20,000/- اور قومی اسمبلی کی Rs.30,000/- مقرر ہے۔

(جاری ہے)

جو کہ یٹرننگ آفیسر کے نام فارم جمع کرتے وقت ادا کرنی ہو گی ،یہ فیس بینک ڈرافٹ بنام ریٹرننگ آفیسر جو کہ نیشنل بینک کے کسی بھی برانچ میں بذریعہ چالان اکاونٹ نمبر(G-11-Special Deposite Investment, G-112-Other Deposite Accounts, G-11220-Deposites in Connection with Elections)میں جمع کروایا جا سکتا ہے اور یاریٹرننگ آفیسر کے دفتر میں نقد جمع کروا کر رسید حاصل کی جا سکتی ہے،،الیکشن کے تمام اخراجات کرنے اور اس کی مکمل تفصیلات رکھنے کے لیئے ایک الگ بینک اکاونٹ کھولنا پڑے گا۔

جو کہ کاغذات نامزدگی میں ظاہر کرنا ہوگا۔جس کے ساتھ (Statement of Account) بھی منسلک کرنی ہو گی،امیدواروں کو اپنے اور اپنے شریک حیات اور بچوں کے تما م اثاثے جو کہ اُس کے نام ہوں اس کی تفصیل / فارم ۔ب پر کاغذات نامزدگی کے ساتھ دینی ہو گی،واضع رہے کہ چنائومیں حصہ لینے کے لئے کم سے کم عمر کی حد نامزدگی فارم جمع کرانے کے دن تک 25 سال ہونی چاہیے۔ اور پارٹی کی طرف سے جاری ترجیحی فہرست کاغذاتِ نامزدگی جمع کرانے کی آخری تاریخ(06.06.2018) تک ہر صورت موصول ہو جانی چاہیے اور ترجیحی فہرست جمع کروانے کے بعد اس میں ردوبدل نہیں کی جاسکتی،جانچ پڑتال میں امیدوار ، تائید کنندہ اور تجویز کنندہ کی موجودگی ضروری ہے۔

مزید برآں امیدوار کی طرف سے کوئی مجاز وکیل بھی جانچ پڑتال میں حصہ / پیش ہو سکتا ہے مزید یہ کہ وہ ووٹرجس نے امیدوار کے کاغذات پر اعتراض جمع کیا ہووہ بھی حصہ لے سکتا ہے۔