ہم نے اس وقت ظالم کے خلاف آواز اٹھائی جب سچ بولنے کی سزا موت تھی ،سید مصطفی کمال

دو سالہ دن دات کی جدوجہد سے آج پی ایس پی کا فکروفلسفہ لوگوں کے دلوں میں گھر کر چکا ہے،چیئرمین پاک سرزمین پارٹی

جمعہ جون 21:02

ہم نے اس وقت ظالم کے خلاف آواز اٹھائی جب سچ بولنے کی سزا موت تھی ،سید ..
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 01 جون2018ء) پاک سر زمین پارٹی کے چیئر مین سید مصطفی کمال نے کہاکہ دوسالہ جدوجہد میں ہم نے ایک ایک گلی، محلے میں جاکر عوام کے ساتھ ملاقاتیں کرکے ان تک اپنی پارٹی کا فکرو فلسفہ پہنچایا اور آج پی ایس پی لوگوں کے دلوں کی آواز بن چکی ہے، انہوں نے کہا کہ اس الیکشن میں تمہاری اگلی سات نسلوں کے فیصلے ہونے جارہے ہیں اس الیکشن سے فیصلہ ہوگا کہ آئندہ اس شہر میں لاشوں کی سیاست ہونی ہے یا بھائیوں کو بھائیوں سے ملانے کی سیاست انہوں نے کہا کہ آپ لوگ ایک بار پی ایس پی کو آزما کر دیکھیں ہم اس شہر کو ویسا ہی بنائینگے جیسے دو ہزار پانچ سے دو ہزار دس تک ہم نے اس شہر میں ترقیاتی کام کر کے دکھائیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے سوسائٹی ٹاؤن میں الیکشن آفس کے افتتاح کی منعقدہ تقریب سے خطاب کر تے ہوئے کیا۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ میرے ساتھیوں یاد رکھنا اگر تم نے اپنے اعمال اچھے رکھے تو اللہ کی مدد خود چل کر آئیگی جو لوگ ہم سے کہتے تھے مصطفی کمال تم گھر سے باہر کیسے نکلوگے تو دیکھو آج پی ایس پی کا نظریہ گھر گھر میں پہنچ چکا ہے اور لوگوں کے دلوں میں گھر کر چکا ہے اور اب کٹی پہاڑی کا پختون بھی پی ایس پی کا ہے اور لیاری کا بلوچ بھی پی ایس پی کو ووٹ دیگا اور لیاقت آباد کا مہاجر بھی اور یہ سب اس رب کا کرم ہے کیونکہ ہم نے مظلوموں کیلئے آواز اٹھائی ہے انہوں نے کہاکہ کراچی میں 216 یو سیز ہیں اور 21 این اے کی سیٹں ہیں ہم نے فیصلہ کیا ہے ہم ہر این اے میں ایک الیکشن آفس قائم کرینگے اور اب ہماری آرگنائزیشن ان آفسز سے ہی چلے گی۔

انہوں نے کہاکہ میں سمجھتا ہوں ساتھیوں اس دو سالوں میں آپ پر کٹھن وقت آگیا ہے کیونکہ آپ نے اس شہر میں اس وقت آواز لگائی جہاں سچ بولنے کی سزا موت تھی اور جہاں شہدا قبرستان بھرنے کی سیاست تھی لیکن آج پی ایس پی کی وجہ سے نوجوان اپنے گھروں کو لوٹ رہے ہیں اور در بدر کی زندگی گزارنے کیبجائے سکون سے راتوں کو گھروں پر سوتے ہیں انہوں نے سوسائٹی ٹاؤن کے لوگوں کے تعاون سے آج اس الیکشن آفس کے افتتاح پر میں ڈسٹرکٹ ایسٹ کے تمام زمہ داروں کومبارکباد پیش کرتا ہوں۔