18ء کے انتخابات کیلئے امیدواروں کو بلوچستان عوامی پارٹی کے ٹکٹ جاری کرنے کیلئے پارلیمانی بورڈ تشکیل دیدیا ہے،جام کمال خان

بلوچستان عوامی پارٹی فرد واحد کی بجائے مشاورت کے بعد فیصلے کریگی ملک میں تبدیلی سیاستدان نہیں بلکہ نوجوان اور عوام ہی لاسکتے ہیں، سردارزادہ میر رامن محمد حسنی کی پارٹی میں شمولیت کے موقع پر پریس کانفرنس

جمعہ جون 21:10

کوئٹہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 01 جون2018ء) بلوچستان عوامی پارٹی کے صدر جام کمال خان علیانی نے کہا ہے کہ2018ء کے انتخابات کیلئے امیدواروں کو بلوچستان عوامی پارٹی کے ٹکٹ جاری کرنے کیلئے پارلیمانی بورڈ تشکیل دیدیا ہے پارٹی بلوچستان بھر میں قومی اور صوبائی اسمبلی کی نشستوں پر اپنے امیدوار کھڑے کریگی ، بلوچستان عوامی پارٹی فرد واحد کی بجائے مشاورت کے بعد فیصلے کریگی ملک میں تبدیلی سیاستدان نہیں بلکہ نوجوان اور عوام ہی لاسکتے ہیں۔

یہ بات انہوں نے جمعہ کو اپنی رہائش گاہ پر قبائلی رہنما سردارزادہ میر رامین محمد حسنی ، نوابزادہ میر احسان گچکی ، میر باری داد محمد حسنی ، تکری محمد عمر محمدحسنی ، محمد حسنی قومی اتحاد کے مرکزی صدر محمد حنیف محمد حسنی ، ٹکری محمد حمزہ محمد حسنی ، میر حاجی پیرجان محمد حسنی ،ایڈووکیٹ قاضی عبدالنجیب محمد حسنی ،میر عنایت اللہ محمد حسنی ، وڈیرہہ عبدالمجید محمد حسنی ،شہزادہ محمد حسنی ، علی گل محمد حسنی اور دیگر کی اپنے ساتھیوں سمیت بلوچستان عوامی پارٹی میں شمولیت کے موقع پر پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہی اس موقع پر پارٹی کے ایڈیشنل جنرل سیکرٹری میراسماعیل لہڑی،ترجمان و سینیٹر انوارالحق کاکڑ، دوستین ڈومکی ،سیکرٹری اطلاعات چوہدری شبیر،محمد عظیم کاکڑ،علاو الدین کاکڑ اوردیگر بھی موجود تھے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ نوجوانوں سے زندہ باد اور مردہ باد کرانے کا دور ختم ہوچکا ہے اب نوجوانوں کو تعلیم،،روزگار اور دیگر بنیادی سہولیات دینا ہونگی ۔انہوں نے کہا کہ بلوچستان عوامی پارٹی کا قیام بڑی سوچ و بچار کے بعد عمل میں لایا گیا ہے پارٹی فرد واحد کی بجائے مشاورت سے تمام فیصلے کریگی اب بلوچستان کے عوا م کی تقدیر کے فیصلے رائے ونڈ،، بنی گالہ یا بلاول ہاؤس میںہونے کی بجائے کوئٹہ میں ہی عوام کی مشاورت سے کئے جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ بلوچستان عوامی پارٹی نے انتخابات2018ء کیلئے امیدواروں کو ٹکٹ جاری کرنے کیلئے پارلیمانی بورڈ تشکیل دیدیا ہے یہ بورڈ درامیدواروں کو پارٹی ٹکٹ جاری کریگا اور پارٹی بلوچستان بھر میں اپنے امیدوار کھڑے کریگی۔ انہوں نے کہا کہ بلوچستان کے عوام نے قوم پرست سیاست کو مسترد کردیا ہے کیونکہ اب عوام جان چکے ہیں کہ قوم پرست عوام کو صر ف اپنے مفادات کیلئے استعمال کرتے ہیں آنے والا دور نوجوانون کا ہے اور بڑی تعداد میں نوجوان بی اے میں شامل ہورہے ہیں ہم دعویٰ نہیں کرتے کہ ہم اقتدار میں آنے کے بعد دودھ اور شہد کی نہریں بہادیں گے ہم وہ وعدے کریں گے اگرعوام نے منتخب کیا تو اقتدار میں آکر وہ وعدے پورے کرسکیں۔

انہوں نے کہاکہ بی اے پی نے تھوڑے ہی عرصے میں بہت زیادہ مقبولیت حاصل کررہی ہے بلوچستان بھر سے قبائلی اورسیاسی شخصیات بی اے پی میں شامل ہورہی ہیں۔اس سے قبل سردارزادہ میر رامین محمدحسنی ،نوابزادہ میر احسان چنگیزی نے اپنے ساتھیوں سمیت جام کمال خان اور دیگرقائدین کی قیادت پر اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے بلوچستان عوامی پارٹی میں شمولیت کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ قوم پرست اور مذہب پرستوں نے بلوچستان کے عوام کو مایوس کیا ہے اور ہم بی اے پی کے رہنماؤں سے امید رکھتے ہیں کہ وہ اقتدارمیں آکر عوام کے مسائل حل کرنے کیلئے ترجیحی بنیادوں پر اقدامات کریں گے۔