مقبوضہ کشمیر میں مکمل ہڑتال،سید علی گیلانی، میر واعظ ، یاسین ملک نظر بند

ہفتہ جون 13:15

سرینگر (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 02 جون2018ء) بھارتی فوجیوں کی طرف سے مقبوضہ کشمیر خاص طور پر جنوبی اضلاع میں شہریوںکے بڑھتے ہوئے قتل ، مذہبی مقامات اور شہداء کی قبروںکی بے حرمتی اور دجبر وا ستبداد کی دیگر کارروائیوں کے خلاف گزشتہ روز مقبوضہ علاقے میں مکمل ہڑتال کی گئی۔کشمیر میڈیا سروس کے مطابق ہڑتال کی کال سید علی گیلانی ،،میر واعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک پر مشتمل مشترکہ حریت قیادت نے دی تھی۔

ہڑتال کا مقصد جیلوں میں غیر قانونی طور پر نظر بند کشمیریوں کی حالت زار کی طرف عالمی برادری کی توجہ مبذول کرانا تھا۔ تمام دکانیں او ر کاروباری مراکز بند رہے جبکہ سڑکوں پر ٹریفک کی آمد و رفت بھی معطل رہی۔دریں اثنابھارتی پولیس نے محمد یاسین ملک کوہفتہ کی صبح سرینگر کے علاقے مائسمہ میں انکے گھر پرچھاپے کے دوران گرفتار کر لیا۔

(جاری ہے)

کٹھ پتلی انتظامیہ نے میر واعظ عمر فاروق کو بھی گزشتہ روز (ہفتہ)کو سرینگر میں گھر میں نظر بند کر دیا جبکہ سید علی گیلانی گزشتہ آٹھ برسوں سے گھر میں نظر بند ہیں۔

انتظامیہ نے قیصر احمد کی شہادت کے بعد سرینگراور بڈگام کے اضلاع میں موبائل فون اور انٹرنیٹ سروسزمعطل کر دیں۔ قیصر احمد کو جمعہ کو بھارتی سینٹرل ریزو پولیس فورس کی ایک گاڑی نے سرینگر میں ایک مظاہرے کے دوران کچل کر شہید کر دیا تھا۔ بارہمولہ اور بانیہال کے درمیان ریل سروس بھی معطل کر دیں گئیں ۔