ملک کو قرضوں سے نجات دلانے کیلئے مشکل ترین فیصلوں سے بھی گریز نہ کیا جائے ‘اشرف بھٹی

ہفتہ جون 14:04

ملک کو قرضوں سے نجات دلانے کیلئے مشکل ترین فیصلوں سے بھی گریز نہ کیا ..
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 02 جون2018ء) آل پاکستان انجمن تاجران کے صدر اشرف بھٹی نے تمام سیاسی جماعتوں کو اپنے منشور میں تاجر طبقے کے مسائل اور ان کے حل کے نکات کو بھی شامل کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس سلسلہ میں تاجر وں کی نمائندوںتنظیموں سے مشاورت کی جائے ،آئندہ جو بھی حکومت بر سر اقتدار آئے اسے ملک کو قرضوںسے نجات دلانے کیلئے مشکل ترین فیصلوں سے بھی گریز نہیں کرنا چاہیے ۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے ’ ’ عام انتخابات اور پاکستان کا مستقبل ‘‘ کے موضوع منعقدہ ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر مختلف تاجر رہنمائوںنے بھی خطاب کیا اور ملک کی بہتری کیلئے اپنی تجاویز پیش کیں۔ اشرف بھٹی نے کہا کہ سیاسی جماعتیں ووٹ لینے کیلئے عوام کو سبز باغ دکھانے کی بجائے وہ وعدے کریں جنہیں پورا کرنا ممکن ہو ۔

(جاری ہے)

اپنی مرضی کے مطابق منشور بنانے کی بجائے ہر شعبے کے ماہرین سے رائے لی جائے اور ان کی تجاویز کو اس کا حصہ بنایا جائے ۔ انہوںنے کہا کہ ہر حکومت کی جانب سے تاجروں کو ملکی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی تو قرار دیا جاتا ہے لیکن ان کے مسائل کو حل کرنے کی بجائے آنکھیں بند کر لی جاتی ہیں۔ اعدادوشمار دیکھ لئے جائیں تاجر طبقہ آج بھی سب سے زیادہ ٹیکسز کی ادائیگی کر رہا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ ہمارا مطالبہ ہے کہ تمام سیاسی جماعتوں کوا پنے منشور میں تاجر طبقے کے مسائل اور ان کے حل کے نکات کو شامل کرنا چاہیے اور اس سلسلہ میں تاجروں کی نمائندوح تنظیموں سے مشاورت کی جائے ۔ اشرف بھٹی نے کہاکہ ملک پر بڑھتے ہوئے اندرونی اور بیرونی قرضے ترقی کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ ہیں اس لئے جو بھی حکومت بر سر اقتدار آئے وہ ملک کو قرضوں سے نجات دلانے کیلئے مشکل ترین فیصلے کرے اور اس کیلئے ترجیحات کا تعین کیا جائے۔

متعلقہ عنوان :