سری نگر؛بھارتی فورسز کی ریاستی دہشتگردی،نوجوان کو گاڑی تلے کچل کر شہید کردیا،ایک نوجوان زخمی ،وادی میں مکمل ہڑتال ،شدید نعرے بازی

بھارت طاقت کے زور پر کشمیریوں کی محبت حاصل نہیں کر سکتا،عالمی بررادی کو خاموشی توڑنا ہوگی،حریت قیادت

ہفتہ جون 16:24

سری نگر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 02 جون2018ء) مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز نے ظلم و بربریت کا مظاہرہ کرتے ہوئے کشمیری دو نوجوانوں پر گاڑی چڑھا دی،جس کے نتیجے میں ایک نوجوان شہید جبکہ ایک زخمی ہوگیا ہے۔کشمیر میڈیا سروس رپورٹ کے مطابق سینٹرل ریزرو پولیس فورس (سی آر پی ایف) کی ایک گاڑی نے اس وقت مذکورہ نوجوانوں کو کچلا،جب کشمیری مظاہرین پولیس کے ہاتھوں ایک جامع مسجد کی بے حرمتی پر احتجاج کر رہے تھے،،شہید نوجوان کی شناخت قیصر بٹ جبکہ زخمی کی شناخت یونس احمد کے نام سے کی گئی ہے،واقعے کے بعد مقبوضہ کشمیر میں غم و غصے کی لہر دوڑ گئی اور واقعے کی تصاویر سوشل میڈیا پر گردش کیوجہ سے سینکڑوں مظاہرین سڑکوں پر نکل آئے،،شہید ہونے والا نوجوان اپنے والدین کی وفات کے بعد سے گزشتہ 4 سالوں سے اپنے رشتہ داروں کے ہمراہ سری نگر کے علاقے دل گیٹ میں رہائش پذیر تھا،واقعے کیخلاف مقبوضہ کشمیر میں مکمل ہڑتال جاری ہے اور حریت کانفرنس کی اپیل پر کاروباری مراکز بند کر دیئے گئے ہیں۔

(جاری ہے)

واضح رہے کہ رواں برس مئی 2018 تک بھارتی فورسز کے ہاتھوں 31 کشمیری شہید ہوچکے ہیں،جن میں ایک خاتون اور 6 9عمر بچے بھی شامل ہیں،اس عرصے میں پیلٹ گنوں اور فائرنگ کے نتیجے میں 314 کشمیری زخمی بھی ہوئے۔اس حوالے حریت رہنماؤں کا کہنا ہے کہ بھارت کی اس درندگی سے وہ کشمیریوں کی محبت حاصل نہیں کر سکتا،اس ظلم و بربریت کیخلاف عالمی برادری کو اپنی خاموشی توڑنا ہوگی۔