آئندہ انتخابات کا معرکہ سیکرلر قوتوں اور دین دوست قوتوں کے درمیان ہوگا ،مولانا عبدالغفور حیدری

دینی قوتیں اپنا مینڈیٹ چوری نہیں ہونے دینگی ، 5جون کو مجلس عمل اپنے انتخابی منشور کا اعلان کریگی،وفد سے گفتگو

ہفتہ جون 18:25

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 02 جون2018ء) جمعیت علماء اسلام کے مرکزی سیکرٹری جنرل وسینیٹ میں مذہبی امور کمیٹی کے چیئرمین سینیٹر مولانا عبدالغفور حیدری نے کہا ہے کہ آئندہ انتخابات کا معرکہ سیکرلر قوتوں اور دین دوست قوتوں کے درمیان ہیں ، دینی قوتیں اپنا مینڈیٹ چوری نہیں ہونے دینگے ، 5جون کو مجلس عمل اپنے انتخابی منشور کا اعلان کریگی ، جولائی میں شہر قائد میں اپنی سیاسی قوت کا مظاہرہ کرینگے ، پارٹی کارکن گھر گھر جمعیت کا پیغام عام کریں۔

(جاری ہے)

انہوں نے یہ بات پارلیمنٹ لاجز میں پارٹی عہدیداروں کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کہی، انہوں نے کہا کہ مجلس عمل پاکستان بھر میں تاریخی کامیابی حاصل کریگی ملک کو اس وقت ایسی قیادت کی ضرورت ہے جو سیاسی معاشی اور تعلیم وصحت سمیت عوام کی دیگر بنیادی ضروریات کو سمجھ سکے انہوں نے کہا کہ پاکستان کو جس مقصد کیلئے معرض وجود میں لایا گیا تھا گزشتہ ستر سالوں سے ملک پہ صاحب اقتدار قوتوں نے اس بنیادی مقصد کی طرف سفر بھی نہیں کیا ، انہوں نے کہا کہ کرپشن نے ہمارے ملک کی جڑیں کھوکھلی کردی ہیں جو بھی اقتدار میں آتا ہیں وہ قومی خزانے کو دونوں ہاتھوں سے بے دریغ لوٹتا ہیں ضرورت اس امر کی ہے کہ عوام ایسے لوگوں کو منتخب کرے جو انکی بنیادی مسائل سمیت ملک کو اسلامی فلاحی ریاست بنانے کیلئے جہدوجہد کرتے ہوں انہوں نے کہا کہ مجلس عمل 5جون کو اسلام آباد میں اپنے انتخابی منشور کا اعلان کریگی جس میں ہم قوم کو بتائیں گے کہ مجلس عمل کس طرح ملک کو ایک ایسی ریاست بنائے گی جس میں عام آدمی کو انکے حقوق میسر ہوں انہوں نے کہا کہ آئندہ انتخابات میں سیکولر قوتوں کیلئے میدان خالی نہیں چھوڑینگے اگر دینی قوتوں کے مینڈیٹ کو چوری کرنے کی کوشش کی گئی تو اسکے خطرناک نتائج سامنے آئینگے انہوں نے کہا کہ ملک بحرانوں سے گزرہا ہے امریکہ اور بھارت پاکستان میں سیاسی عدم استحکام پیدا کرنا چاہتے ہیں لیکن انتخابات کے التواء کو کسی صورت قبول نہیں کرینگے جمہوریت اور الیکشن کا تسلسل ہی اس ملک میں استحکام کا واحد ذریعہ ہیں۔