عالمی امن و استحکام کے لئے امریکہ نے خطرے کی گھنٹی بجا دی ،فلسطینی تحفظ بل ، امریکی ویٹو پر ترکی کی کڑی تنقید

بل کا ویٹو کیا جانا ناقابل فہم اور کسی طور قبول نہیں، امریکہ سنگین غلطیوں کا مرتکب ہو رہا ہے،ترکی

ہفتہ جون 20:17

انقرہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 02 جون2018ء) ترکی نے سلامتی کونسل میں فلسطینی تحفظ بل کو امریکہ کی جانب سے ویٹو کئے جانے پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ کی جانب سے بل کا ویٹو کیا جانا ناقابل فہم اور کسی طور قبول نہیں،عالمی امن و استحکام کے لئے امریکہ نے خطرے کی گھنٹی بجا دی ، امریکہ سنگین غلطیوں کا مرتکب ہو رہا ہے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق غزہ میں 14 مئی کو پیش آنے والے قتل عام کے بعد کویت کی جانب سے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں پیش کردہ مسودہ قرار داد پر امریکہ کا ویٹو انتہائی افسوس دہ ہے۔

ترکی نے متحدہ امریکہ کے فلسطین کے حوالے سے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں پیش کردہ مسودہ قرار داد کو ویٹو کرنے پر ردعمل کا مظاہرہ کیا ہے۔دفترِ خارجہ کے تحریری اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ ""غزہ میں 14 مئی کو پیش آنے والے قتل عام کے بعد کویت کی جانب سے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں پیش کردہ مسودہ قرار داد پر امریکہ کا ویٹو انتہائی افسوس دہ ہے۔

(جاری ہے)

""اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے فلسطینیوں پر ڈھائے گئے تشدد کے حوالے سے حساب پوچھنے اور اسرائیل کو اس قسم کی گھنانی حرکات سے باز رکھنے میں ایک بار پھر ناکام رہنے پر توجہ مبذول کرانے والے اعلان میں کہا گیا ہے کہ اقوام متحدہ میں اصلاحات کو ملتوی نہ کیا جا سکنے والا ایک لازمی امر ہے۔اعلامیہ میں مزید کہا ہے کہ "عالمی امن و استحکام و سلامتی کے تحفظ کے حوالے سے پہلے درجے کے ذمہ دار اور اختیاراتی ادارے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں پر امن احتجاجی مظاہرے کرنے والے معصوم شہریوں کو ہدف بنانے والے قتل عام اور سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ کی جانب سے زیر محاصرہ زندگی بسر کرنے والے فلسطینیوں کے تحفظ کو بین الاقوامی میکانزم میں شامل کرنے کی اپیل کے حامل مسودے کو ویٹو کیا جانا ایک ناقابل قبول اور ناقابل جواز فعل ہے۔