راولپنڈی:غیر ت کے نام پر سولہ سالہ لڑکی مریم قتل

ملزم عدنان گرفتار کرلیا گیا ، مقتولہ کا ماموں زاد بھائی تھا، قبضے سے آلہ قتل بھی برآمد ، جسمانی ریمانڈ کیلئے آج عدالت میں پیش کیاجائیگا ، نعش پوسٹ مارٹم کے بعد ورثاء کے حوالے کردی ہے ، پولیس

ہفتہ جون 21:54

راولپنڈی:غیر ت کے نام پر سولہ سالہ لڑکی مریم قتل
راولپنڈی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 02 جون2018ء) تحصیل گوجر خان میں غیرت کے نام پر 16 سالہ لڑکی مریم کو قتل کرنے والے ملزم عدنان کو گرفتار کرلیا گیا، جبکہ اس کے قبضے سے آلہ قتل بھی برآمد کرلیا گیا۔۔پولیس ذرائع کے مطابق گوجر خان کے علاقے ڈھوک حیات علی میں قتل ہونے والی لڑکی کی لاش کا پوسٹ مارٹم ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال گجر خان سے کرانے کے بعد میت ورثائ کے حوالے کردی گئی۔

پولیس کے مطابق لڑکی کو قتل کرنے والا شخص اس کا پھوہھی زاد بھائی ہے جو گھر کے قریب ہی رہائش پذیر تھا۔ادھر مقتولہ کی والدہ کی مدعیت میں نامزد ملزم کے خلاف مقدمہ بھی درج کرلیا گیا، پولیس حکام کا کہنا ہے کہ ملزم کا جسمانی ریمانڈ حاصل کرنے کے لیے ملزم کو آج (3 جون کو) مقامی عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

(جاری ہے)

گجر خان پولیس کے مطابق جمعرات کو افطاری سے ڈیڑھ گھنٹہ قبل ڈھوک حیات علی میں 16 سالہ مریم کو اس کے کزن عدنان عرف دانی نے غیرت کے نام پر قتل کر دیا تھا۔

پولیس کا کہنا تھا کہ مقتولہ مریم کچھ دن قبل عرفان حیدر نامی نوجوان کے ساتھ گھر سے فرار ہوگئی تھی، تاہم 3 دن قبل نوجوان عرفان حیدر کے گھر والوں نے لڑکی کے کم عمر ہونے کی وجہ سے اسے گھر واپس چھوڑ کر شادی کرنے سے انکار کر دیا تھا۔اس حوالے سے محلہ ڈھوک حیات علی کے ایک رہائشی اور عینی شاہد نے بتایا کہ مقتولہ لڑکی کا والد مطلوب حسین ڈیڑھ سال قبل خشکی کے راستے سے ترکی گیا تھا اور وہ اب بھی وہیں قیام پذیر ہے، جبکہ مقتولہ اور اس کی والدہ گھر میں کریانہ اسٹور چلاتے تھے۔

محلہ دار کا مزید کہنا تھا کہ مقتولہ اکثر بازار سے چیزیں لینے جاتی تھی اور اس دوران اس کی دوستی رکشہ ڈرائیور عرفان حیدر سے ہوئی، بات جب شادی تک پہنچی تو وہ رکشہ ڈرائیور کے ساتھ گھر سے چلی گئی تھی۔بعدازاں گھر واپس پہنچائے جانے پر مقتولہ کے کزن عدنان کو طیش آگیااور اس نے غیرت میں آکر اپنی ماموں زاد بہن کو اس کے گھر جاکر فائرنگ کرکے زخمی کر دیا، جس کے بعد لڑکی کو انتہائی تشویشناک حالت میں تحصیل ہیڈ کوارٹر اسپتال گجر خان منتقل کیا گیا لیکن وہ جانبر نہ ہو سکی اور جاں بحق ہوگئی۔ا