جمعیت علماء پاکستان(نورانی) کی دعوت پر اہل سنت کے گرینڈ الائنس اور دیگر سنی جماعتوں کا مشترکہ اجلاس

اجلاس میں تمام سنی جماعتوںکا ڈاکٹر صاحبزادہ ابوالخیر محمد زبیر کی قیادت پر مکمل اعتماد کا اظہار،قومی اسمبلی کے حلقہ NA-227پر کھڑا کرنے ان کے مقابلے میں اپنا کوئی امیدوار نہ لانے اور ان کی بھرپور حمایت کا فیصلہ

ہفتہ جون 23:05

حیدرآباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 02 جون2018ء) جمعیت علماء پاکستان((نورانی) کی دعوت پر اہل سنت کے گرینڈ الائنس اور دیگر سنی جماعتوں کا مشترکہ اجلاس جے یو پی، ملی یکجہتی کونسل اور نظام مصطفی محاذ کے صدر ڈاکٹر صاحبزادہ ابوالخیر محمد زبیر کی زیر صدارت رکن الاسلام جامعہ مجددیہ ہیرآباد میں ہوا، جے یو پی کے مرکزی سیکریٹری اطلاعات ڈاکٹر محمد یونس دانش،صوبائی نائب صدرناظم علی آرائیں ضلعی صدرصاحبزادہ محمود احمد قادری،جماعت اہلسنت پاکستان حیدرآباد ڈویژن کے امیر مولانا محرم دین قادری،،پاکستان سنی تحریک ضلع حیدرآبادکے کنونیئر محمد عابد قادری،سیدساجد علی کاظمی ،مرکزی جماعت اہلسنت کے صوبائی امیر قاری نیاز احمد نقشبندی ،ضلعی ناظم اعلیٰ حافظ محمد رضوان نقشبندی،تحریک لبیک اسلام کے خضر جیلالی،،ڈاکٹر وقاص ،انجمن اساتذہ پاکستان کے سید اکرم علی شاہ،،جمعیت علماء طاہریہ اور اصلاح المسلمین کے مولانا عبدالستار بوذدار اورارباب علی، محمد رضوان شیخ، ناصر قادری چاند نبی ،طلعت محمود،ارشاد حسین نقشبندی نے اجلاس میں شرکت کی۔

(جاری ہے)

اجلاس میں تمام سنی جماعتوں نے ڈاکٹر صاحبزادہ ابوالخیر محمد زبیر کی قیادت پر مکمل اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے انہیں قومی اسمبلی کے حلقہ NA-227پر کھڑا کرنے ان کے مقابلے میں اپنا کوئی امیدوار نہ لانے اور ان کی بھرپور حمایت کا فیصلہ کیا گیا،اجلاس میںضلع کی دیگر قومی اور صوبائی نشستوں کیلئے مشترکہ اور متفقہ امیدوار وںکے چناؤکے سلسلے میںتمام جماعتیںباہمی مشاور ت سے جلد ہی ضلعی عہدیداروںکے اگلے اجلاس میں فیصلہ کریں گی، اجلاس میں اہلسنت کے گرینڈ الائنس نظام مصطفیٰ محاذ کے قیام کو نظام مصطفیٰ ﷺ کے عملی نفاذ کیلئے نقطہ آغاز قرار دیتے ہوئے امید ظاہر کی گئی کہ اہلسنت اس پلیٹ فارم سے اپنا کھویا ہوا وقار بحال کرنے اور صالح دیانتدار مخلص عوام کا درد رکھنے والی قیادت کو پارلیمنٹ میں پہنچانے میں ضرور کامیاب ہو گی، اجلاس میںاس امر پر بھی خوشی کا اظہار کیا گیا کہ پاکستان بنانے والوں کی اولادیں پاکستان بچانے اور ختم نبوت کے غداروں کا مقابلہ کرنے کیلئے میدان عمل میں نکل آئے ہیں، اجلاس میں اتوار3جون کو سنی جماعتوں کے مقامی عہدیداروں کے اجلاس کابھی فیصلہ کیا گیا اور دیگرسیاسی جماعتوں سے رابطے تیز کرنے نظام مصطفیٰ محاذ کے متفقہ امیدواروں کی مکمل حمایت کا اعادہ کیا گیا۔

صدارتی خطاب میں صاحبزادہ ابوالخیر محمد زبیر نے کہا کہ اس وقت ختم نبوت اور ناموس رسالت کے قوانین میں ترامیم کیلئے بیرونی ایجنڈے پر کام ہورہا ہے ملک کی اسلامی شناخت کو مٹانے کیلئے مغربی قوتوں کے ایجنڈے پاکستان کوسیکولر اسٹیٹ بنانے کی سازشیں کررہے ہیں اخلاقیات سے عاری جنسی بے راہ روی کے قوانین بنا کر مسلمان نسل کو تباہ کیا جارہا ہے عصبیت کی آگ بھڑکانے اور فرقہ واریت کے ذریعے ملک میں انتشار کو ہوادینے کی سازشیں کی جاری ہیں، انہوں نے کہا کہ اس وقت بانیان پاکستان کے وارثین کو اپنا بھرپورکردار ادا کرنا چاہئے اور پارلیمنٹ میں اپنے نمائندوں کو بھیجنا چاہئے تاکہ دستور کی اسلام دفعات کا تحفظ کیا جا سکے۔