لیڈز ٹیسٹ کے دوسرے روز کے کھیل کا اختتام

بھرپور کوششوں کے بعد پاکستان کسی حد تک کم بیک کرنے میں کامیاب، انگلینڈ 128 رنز کی برتری حاصل کرنے میں کامیاب

muhammad ali محمد علی ہفتہ جون 23:30

لیڈز ٹیسٹ کے دوسرے روز کے کھیل کا اختتام
لیڈز (اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 2 جون 2018 ء) لیڈز ٹیسٹ کے دوسرے روز کے کھیل کا اختتام بھرپور کوششوں کے بعد پاکستان کسی حد تک کم بیک کرنے میں کامیاب ہوگیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان لیڈز میں دو ٹیسٹ میچوں کی سیریز کا دوسرا اور آخری میچ کھیلا جا رہا ہے۔ اب میچ کے دوسرے روز کے کھیل کا اختتام ہوگیا ہے۔ بھرپور کوششوں کے بعد پاکستان کسی حد تک کم بیک کرنے میں کامیاب ہوا ہے۔

جبکہ انگلینڈ 128 رنز کی برتری حاصل کرنے میں کامیاب ہو گیا ہے اور اس کی تین وکٹیں ابھی بھی باقی ہیں۔انگلیئنڈ نے 7 وکٹوں کے نقصان پر 302 رنز بنا لیے ہیں۔ انگلینڈ کی جانب سے ڈی ایم بیس 49 رنز بنا کر نمایاں رہے۔ جبکہ پاکستان کی جانب سے محمد عامر اور فہیم اشرف نے 2، 2 وکٹیں حاصل کی ہیں۔

(جاری ہے)

اس سے قبل دوسرے ٹیسٹ کی پہلی اننگز میں پاکستان کی بیٹنگ لائن بری طرح ناکام دکھائی دی اور پوری ٹیم 174 رنز پر پویلین لوٹ گئی جس کے جواب میں پہلے دن کے اختتام تک انگلینڈ نے 2 وکٹ کے نقصان پر 106 رنز بنالیے ہیں۔

ہیڈ نگلے میں ہونے والے دوسرے ٹیسٹ میں پاکستان کی پورتی ٹیم 174 رنز پر آﺅٹ ہوگئی جس کے جواب انگلینڈ کی جانب سے پہلی اننگز میں الیسٹر کک اور کیٹن جیننگز نے اننگز کا آغاز کیا، فہیم اشرف کو جیننگز کو فہیم اشرف نے 29 رنز پر پویلین بھیجا جب کہ الیسٹر کک 46 رنز پر حسن علی کا شکار بنے۔ دن کے اختتام پر ڈومینک بیس صفر اور کپتان جو روٹ 29 رنز کیساتھ وکٹ پر موجود ہیں۔

اس سے قبل قومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا جو درست ثابت نہ ہوا اور یک بعد دیگرے پاکستان کے بلے باز پویلین لوٹتے رہے ایک موقع پر 79 رنز پر 7 کھلاڑیوں کے آﺅٹ ہوجانے پر ٹیم کے لیے 100 رنز بھی بنانا مشکل دکھائی دے رہا تھا تاہم شاداب خان نے شاندار بیٹنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے نصف سنچری سکور کی جبکہ حسن علی نے بھی 24 رنز بناکر انکا بھرپور ساتھ دیا، شاداب خان 56 رنز کے ساتھ ٹاپ سکورر رہے۔

قومی ٹیم کی جانب سے اننگز کا آغاز اظہرعلی اور امام الحق نے کیا لیکن امام الحق کھاتہ کھولے بغیر ہی رخصت ہوگئے اور اظہر علی بھی 2 رنز کے مہمان ثابت ہوئے۔ حارث سہیل اور اسدشفیق نے کچھ دیر مزاحمت کی لیکن وہ بھی بالترتیب 28 اور 27 رنز بناکر آﺅٹ ہوگئے۔ کپتان سرفراز احمد صرف 14 رنز کے مہمان ثابت ہوئے۔ٹاپ آرڈر کے پویلین لوٹ جانے کے بعد ٹیم مینجمنٹ نے تمام تر امیدیں، لارڈز ٹیسٹ میں ان فٹ ہونےوالے بیٹسمین بابر اعظم کی جگہ ڈیبیو کرنےوالے عثمان صلاح الدین سے باندھ لیں لیکن انہوں نے بھی مایوس کن کارکردگی دکھائی اور صرف 4 رنز پر ہی پویلین واپس لوٹ گئے۔

فہیم اشرف کھاتہ کھولے بغیر ہی آﺅٹ ہوئے جب کہ محمد عامر نے 13 رنز کی اننگز کھیلی۔ انگلینڈ کی جانب سے جیمز اینڈریسن، سٹورٹ براڈ اور کرس ووکس نے 3،3 وکٹیں حاصل کیں۔واضح رہے کہ پہلے ٹیسٹ میں پاکستان نے انگلینڈ کو چاروں شانے چت کرتے ہوئے 9 وکٹوں سے شکست دی تھی۔

متعلقہ عنوان :