کماد کے کاشتکاروں کو گڑوؤں کے تدارک کیلئے فوری دانے دار زہروں کے استعمال اور کھیتوں کو پانی لگانے کی ہدایت

اتوار جون 12:30

فیصل آباد۔3 جون(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 03 جون2018ء) کماد کے کاشتکاروں کو گڑوؤں کے تدارک کیلئے فوری دانے دار زہروں کے استعمال اور کھیتوں کو پانی لگانے کی ہدایت کی گئی ہے اورکہاگیاہے کہ کاشتکار ماہرین زراعت یا محکمہ زراعت کے توسیعی کارکنان کے مشورے سے مناسب زہروں کااستعمال کریں تاکہ گڑوؤں کے باعث کماد کی فصل کو بڑے نقصان سے بچایاجاسکے۔

ماہرین زراعت نے ایک ملاقات کے دوران بتایاکہ کماد کی فصل کو 10 سے 12 دن کے وقفہ سے آبپاشی کرتے رہنا چاہیے تاکہ فصل کو پانی کی کمی نہ آئے ۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہاکہ کاشتکار پانی کی کمی کی صورت میں ایک کھیلی چھوڑ کرآبپاشی کریں اور اگلے پانی پر صرف چھوڑی ہوئی کھیلیوں کو پانی لگائیں ۔ انہوںنے کہاکہ بہاریہ کماد کو نائٹروجن کھاد کی آخری قسط و تیسری خوراک جون کے آخر ی عشرے میں ڈالی جائے اور اگر کھاد ڈالنے میں تاخیر ہو جائے تو برسات شروع ہونے پر فصل بڑھوتری اورپھوٹ کرسکتی ہے جس سے فصل کے گرنے اور پیداوار متاثر ہونے کا خطرہ ہوتا ہے ۔

انہوںنے کہاکہ کاشتکار مونڈھی فصل کو نئی فصل کی نسبت 30 فیصد زیادہ کھاد بھی ڈالیں ۔ انہوںنے کہاکہ کاشتکار مزید رہنمائی کیلئے ماہرین زراعت کی خدمات یا محکمہ زراعت کے فیلڈ سٹاف کی مشاورت سے بھی استفادہ کرسکتے ہیں۔

متعلقہ عنوان :