یمنی بندرگاہ پر قبضے کی جنگ، 20سرکاری فوجی اور 110حوثی ہلاک

الحدیدہ پر کنٹرول کی جنگ یکم جون سے صدرہادی کی فوج اور ایران نواز حوثی ملیشیا کے درمیان جاری ہے،ذرائع

اتوار جون 13:00

یمنی بندرگاہ پر قبضے کی جنگ، 20سرکاری فوجی اور 110حوثی ہلاک
صنعائ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 03 جون2018ء) یمن کی الحدیدہ کی بندرگاہ کے قریب حوثیوں باغیوں اورسرکاری فورسز کے درمیان ہونیوالی جھڑپوں میں 110افرادہلاک ہوگئے جس میں سے 52 نعشیں الحدیدہ کے جنگی علاقے سے ہسپتالوں میں پہنچائی گئی ہیں، ان میں 20 فوجیوں کی ہیں۔ الحدیدہ پر کنٹرول کی جنگ صدر منصور ہادی کی فوج اور ایران نواز حوثی ملیشیا کے درمیان جاری ہے۔

بحیرہ احمر پر واقع الحدیدہ کی بندرگاہ اسٹریٹیجک اہمیت کی حامل ہے۔

(جاری ہے)

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق یمن کے طبی اور عسکری ذرائع نے تصدیق کی کہ الحدیدہ کی بندرگاہ کے قریب ہونے والی جنگ میں ہلاکتوں کی تعداد ایک سو سے تجاوز کر گئی ہے۔ یکم جون سے شروع ہونے والی اس لڑائی میں ہلاکتوں کی تعداد ایک سو دس بتائی گئی ہے۔ عدن کے طبی ذرائع نے بتایا کہ کم از کم باون نعشیں الحدیدہ کے جنگی علاقے سے ہسپتالوں میں پہنچائی گئی ہے۔ ان میں بیس فوجیوں کی ہیں۔ الحدیدہ پر کنٹرول کی جنگ صدر منصور ہادی کی فوج اور ایران نواز حوثی ملیشیا کے درمیان جاری ہے۔ بحیرہ احمر پر واقع الحدیدہ کی بندرگاہ اسٹریٹیجک اہمیت کی حامل ہے۔

متعلقہ عنوان :