محصولات عائد ہونے کی صورت میں امریکہ کیساتھ تجارتی معاہدہ نہیں ہوگا،چین

یہ چین کا موقف اور ریڈ لائن ہے، دونوں ملکوں کے درمیان طے شدہ نتائج تجارتی جنگ نہ ہونے کی بنیاد پر ہیں، نائب چینی وزیر اعظم لیو حے کی امریکی وفد سے گفتگو

اتوار جون 18:10

بیجنگ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 03 جون2018ء) چین نے امریکہ کو تنبیہ کی ہے کہ اگر امریکہ نے تعزیرات اور محصولات میں اضافہ کرنے کی دھمکی پر عمل درآمد کیا تو واشنگٹن کے ساتھ تجارتی تنازع حل کرنے کے لیے ہونے والی بات چیت موثر نہیں ہوگی،یہ چین کا موقف اور ریڈ لائن ہے، دونوں ملکوں کے درمیان طے شدہ نتائج تجارتی جنگ نہ ہونے کی بنیاد پر ہیں۔ چائنہ ریڈیو انٹر نیشنل کے مطابق چین کے نائب وزیر اعظم لیو حے کی قیادت میں چین کے وفد نے امریکہ کے وزیر تجارت کی قیادت میں امریکی وفد کے ساتھ بیجنگ میں دونوں ملکوں کے اقتصادی و تجارتی مسئلے پر صلاح و مشورہ کیا۔

فریقین نے واشنگٹن میں دونوں ملکوں کے درمیان طے شدہ اتفاق رائے پر عمل درآمد کے لئے زراعت، توانائی سمیت شعبوں میں سنجیدہ تبادلہ خیال کیا۔

(جاری ہے)

جس سے مثبت اور ٹھوس پیش رفت حاصل ہوئی ہے ۔فریقین متعلقہ تفصیلات کا تعین کریں گے۔ اس موقع پر امریکہ کے وزیر تجارت نے کہا کہ چین کے ساتھ مذاکرات اب تک دوستانہ اور مثبت ثابت ہوئے ہیں ۔ مذاکرات میں امریکہ سے برآمد کردہ سامان کے زمرے سے متعلق موضوعات شامل ہوئے۔

چین نے کہا کہ دونوں ملکوں کے درمیان طے شدہ نتائج تجارتی جنگ نہ ہونے کی بنیاد پر ہیں۔ اگر امریکہ چین پر تجارتی پاپندیاں لگائے گا، تو دونوں اطراف کے درمیان حاصل کردہ اتفاق رائے پر عمل درآمد نہیں ہو سکے گا ۔ یہ چین کا موقف اور ریڈ لائن ہے، یہ چین اور امریکہ کے درمیان واشنگٹن میں طے شدہ اتفاق رائے کو عمل میں لانے کی کلیدی بات بھی ہے۔