غذر گلگت ایکسپریس وے منصوبے کی رقم نلتر ایکسپریس وے کی تعمیر کیلئے مختص ہونا غذر کے عوامی نمائندوں کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے ،عطا الرحمن ایڈوکیٹ

اتوار جون 21:00

غذر (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 03 جون2018ء) پاکستان تحریک انصاف کے سینئر نائب صدر گلگت ڈویژن عطا الرحمن ایڈوکیٹ نے کہا ہے غذر گلگت ایکسپریس وے منصوبے کی رقم نلتر ایکسپریس وے کی تعمیر کیلئے مختص ہونا غذر کے منتخب عوامی نمائندوں کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے ،جو لوگ دوران الیکشن غربت و مفلسی کا رونا روکر اسمبلی پہنچ جاتے ہیںوہ حق نمائندگی سے محروم ہوجاتے ہیں ،ایسے منتخب نمائندے ایوان اسمبلی کے اندر اور دیگر سیاسی فورمز میں بھی اپنے حلقے اور علاقے کے حقوق حاصل کرنے میں بری طرح ناکام ہوجاتے ہیں ،کمزور نمائندگی کی وجہ سے علاقہ مسائلستان بن گیا ہے ۔

(جاری ہے)

انہوں نے اپنے بیان میں کہا کہ غذر کی عوام کو سبز باغ دیکھایا گیا اور غذر روڈ کو سی پیک میں شامل کرنے کا بھی ڈرامہ رچایا گیا بعد ازاں گلگت غذر روڈ کو ایکسپریس وے بنانے کی باتیں اور اعلانات ہوتے رہے اب یہ حقیقت سامنے آئی ہے کہ غذر روڈ کو نہ سی پیک میں شامل کیا جارہا ہے اور نہ ایکسپریس وے بنایا جارہا ہے ،غذر گلگت روڈ کیلئے مختص رقم کو غذر روڈ کی بجائے نلتر ایکسپریس وے پر لگایا جارہا ہے ،دوسری طرف غذر کے عوام کو بیوقوف بنانے کے لئے گلگت سے گاہکوچ تک ٹوٹی سڑک پر تاکول کی پٹی لگاکر بیوقوف بنایا جارہا ہے ،غذر کو ایک بے اختیار وزارت کی رسی میں باندہ کر موجودہ حکومت علاقے کی تعمیر وترقی سے گریزاں ہے ایسا لگ رہا ہے کہ وزرات کے حصول کے وقت عوامی مطالبات سے غیر مشروط طور پر دستبردار کرایا گیا ہے ،گلگت چترال ایکسپریس وے کی تعمیر اور اضافی سیٹ و اضافی ضلع کا قیام کا مطالبہ محض ایک خواب رہا اور منتخب نمائندے حق نمائندے حق اختیار نمائندگی میں یکسر ناکام ہوچکے ہیں ۔