ملک بھرکے ریٹرننگ افسران نے کاغذات نامزدگی کا اجرا ءشروع کردیا

کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کیلئے الیکشن کمیشن نے سنٹرل سکروٹنی سیل تشکیل دیدیا

Mian Nadeem میاں محمد ندیم پیر جون 12:06

ملک بھرکے ریٹرننگ افسران نے کاغذات نامزدگی کا اجرا ءشروع کردیا
اسلام آباد(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔04 جون۔2018ء) ملک بھرکے ریٹرننگ افسران نے کاغذات نامزدگی کا اجرا ءشروع کردیا ہے۔ کاغذات نامزدگی 8 جون تک حاصل اورجمع کرائے جائیں گے جوصبح 8 بجے سے دن 4 بجے تک حاصل کیے جاسکیں گے۔ کاغذات نامزدگی اردو اور انگریزی دونوں زبانوں میں دستیاب ہیں جس کی فیس 100 روپے ہے۔۔الیکشن کمیشن کے مطابق قومی اسمبلی کے لئے کاغذات نامزدگی جمع کرانے کی سیکورٹی فیس 30 ہزارروپے رکھی گئی ہے جب کہ صوبائی اسمبلی کے لئے کاغذات نامزدگی جمع کرانے کی سیکورٹی فیس 20 ہزارروپے رکھی گئی۔

ایک چوتھائی سے کم ووٹ حاصل کرنے کی صورت میں فیس ضبط کرلی جائے گی۔ 8 جون کو ہی امیدواروں کی لسٹ آویزاں کی جائینگی۔۔الیکشن کمیشن کے شیڈول کے مطابق ریٹرننگ افسروں کی طرف سے کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال 14 جون تک کی جائے گی، ریٹرننگ افسروں کے فیصلے کے خلاف اپیلیں 19تاریخ تک دائر کی جاسکیں گی جبکہ اپیلیٹ ٹریبونل ان اپیلوں پر فیصلہ اس ماہ کی 26تاریخ تک کریں گے۔

(جاری ہے)

امیدواروں کی نظرثانی شدہ فہرست 27 جون کو آویزاں کی جائے گی جبکہ امیدوار اس ماہ کی28جون تک اپنے نام واپس لے سکیں گے اوراسی دن امیدواروں کی حتمی فہرست جاری کی جائے گی۔۔انتخابات میں حصہ لینے والے امیدواروں کو انتخابی نشانات اس ماہ کی29تاریخ کو دیئے جائیں گے۔واضح رہے کہ لاہورہائیکورٹ نے الیکشن کے کاغذات نامزدگی کالعدم قراردے دیے تھے جس کے بعد الیکشن کمیشن اوراسپیکراسمبلی ایاز صادق نے لاہورہائیکورٹ کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ میں اپیل دائرکی، سپریم کورٹ نے اپیل منظورکرتے ہوئے لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کو کالعدم قراردے دیا تھا۔

الیکشن کمیشن کے نوٹیفکیشن کے مطابق الیکشن شیدول جوں کا توں رہے گا صرف کاغذات نامزدگی کے اجراءمیں دو دن کی تاخیر ہوئی ہے۔کاغذاتِ نامزدگی کی وصولی کیلئے پہلے دو سے چھ جون کی تاریخ دی گئی تھی، مگر لاہور ہائیکورٹ کی جانب سے نے نامزدگی فارم کالعدم قرار دیئے جانے کی وجہ سے انتخابی عمل رک گیا تھا۔ سپریم کورٹ نے لاہور ہائیکورٹ کا فیصلہ معطل کر دیا تھا۔

الیکشن کمیشن نے کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کیلئے سنٹرل سکروٹنی سیل تشکیل دیدیا ہے۔ سیکرٹری الیکشن کمیشن سیل کے سربراہ ہوں گے۔ چار ٹیموں پر مشتمل 36 رکنی سیل چوبیس گھنٹے کام کرے گا۔ذرائع کے مطابق 4 ٹیموں پر مشتمل سنٹرل سکروٹنی سیل آج سے باضابطہ طور پر کام شروع کرے گا۔ سیل امیدواروں کی آرٹیکل 62، 63 کے مطابق جانچ پڑتال یقینی بنانے میں مدد دے گا۔ نادرا،، ایف آئی اے، نیب، ایف بی آر اور سٹیٹ بینک سے رابطہ کر کے دوہری شہریت،، قرضوں کی عدم ادائیگی اور انکم ٹیکس کی معلومات جمع کرے گا۔۔الیکشن کمیشن کا سنٹرل سکروٹنی سیل دو شفٹوں میں 24 گھنٹے کام کریگا۔ ریٹرننگ افسران اور متعلقہ اداروں کے درمیان کوآرڈینشن کے فرائض بھی انجام دے گا۔