اٹلی کے کٹر نظریات کے حامل مہاجرت مخالف نئے وزیر داخلہ کا دورہ سِسلی

سالوینی آج لکسمبرگ میں یورپی یونین رکن ممالک کے وزرائے خارجہ کے ایک اجلاس میں بھی شریک ہوں گے

پیر جون 12:30

سسلی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 جون2018ء) اٹلی کے کٹر نظریات کے حامل مہاجرت مخالف نئے وزیر داخلہ ماتیو سالوینی نے سِسلی کا دورہ کیاہے۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق یہ اطالوی جزیرہ اس یورپی ملک پہنچنے والے مہاجرین کی پہلی اہم منزل قرار دیا جاتا ہے۔کٹر نظریات کے حامل سیاستدان سالوینی کی انتہائی دائیں بازو کی سیاسی پارٹی لیگ مہاجرت مخالف مہم کے باعث ہی عوامی مقبولیت حاصل کرنے میں کامیابی ہوئی ہے۔

اٹلی میں رواں ماہ ہی بلدیاتی انتخابات کا انعقاد کیا جا رہا ہے اور یہ پارٹی اپنے ووٹ بینک میں مزید مضبوط بنانے کی کوشش میں ہے۔ سالوینی کا یہ دورہ اسی تناظر میں دیکھا جا رہا ہے۔ اٹلی کی مخلوط حکومت میں شامل لیگ مہاجرین کی آمد کے سلسلے کو روکنے کا مطالبہ کر رہی ہے۔

(جاری ہے)

سالوینی نے کہاکہ وہ اپنی وزارت کے ماہرین سے پوچھیں گے کہ ملک میں مہاجرین کی آمد کو کس طرح روکا جا سکتا ہے اور غیرقانونی مہاجرین کی ملک بدری کو کیسے تیز کیا جا سکتا ہے۔

اطالوی وزیر داخلہ سالوینی منگل کے دن لکسمبرگ میں یورپی یونین رکن ممالک کے وزرائے خارجہ کے ایک اجلاس میں بھی شریک ہوں گے۔ اس ملاقات میں یورپی یونین کی اس متنازعہ ڈیل پر توجہ مرکوز کی جائے گی، جس کے تحت مہاجرین کو اسی ملک میں پناہ کی درخواست دائر کرنا ہوتی ہے، جو ان کی پہلی منزل ہوتا ہے۔ اس ڈیل کی وجہ سے سب سے زیادہ بوجھ اٹلی پر پڑا ہے، کیونکہ سن 2013 سے اب تک تقریبا سات لاکھ مہاجرین کی پہلی منزل یہی ملک تھا۔