نواز شریف نے لوڈ شیڈنگ کی ذمہ داری نگران حکومت پر ڈال دی

ہم اپنے دور کے ذمہ دار ہیں،سب کچھ ٹھیک چھوڑ کر گئے تھے، احتساب عدالت کے باہر سابق وزیر اعظم نواز شریف کی صحافیوں سے غیر رسمی گفتگو

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان پیر جون 12:48

لاہور(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔04جون 2018ء) سابق وزیراعظم نواز شریف نے لوڈ شیڈنگ کا ملبہ نگران حکومت پر گرا دیا۔ احتساب عدالت میں العزیزیہ ریفرنس کی سماعت میں پیشی کے موقع پر صحافیوں سے غیررسمی گفتگو کے دوران نواز شریف نے کہا کہ 'میں صرف یہ کہتا ہوں جب تک ہماری حکومت تھی تو سب ٹھیک تھا، آخری دنوں میں شہباز شریف اور شاہد خاقان عباسی نے بہت سے منصوبوں کے افتتاح کیے۔

احتساب عدالت کے باہر صحافی نے نواز شریف سے سوال کیا کہ میاں صاحب آج کل لوڈ شیڈنگ بہت ہو رہی ہے تو نواز شریف کا کہنا تھا کہ ہم اپنے کیے کے ذمہ دار ہیں۔اب جو لوڈ شیڈنگ ہو رہی ہے اس کا نگران حکومت سے پوچھیں۔ہمارے دور میں تو سب ٹھیک تھا۔اس موقع پر مریم نواز کا کہنا تھا کہ اچھی خاصی بجلی چھوڑ کر گئے تھے تو نواز شریف نے کہا کہ ہم تو سب ٹھیک ٹھاک چھوڑ کر گئے تھے۔

(جاری ہے)

نواز شریف نے کہا کہ ہمارے دور میں تو کوئی لوڈ شیڈنگ نہیں ہوئی۔اب یہ حکومت ذمہ دار ہے۔انہوں نے کہا ہم تو ملک میں روشنیاں لے کر آئے ہیں۔۔نواز شریف نے مزید کہا کہ کہا کہ وفاق اور پنجاب میں 39 میگا منصوبے شروع کئے، نیلم، جہلم اور تربیلا 4 کو مکمل کیا، گوادر کوئٹہ سڑک بنائی، برہان سے ڈی آئی خان تک سڑک زیر تعمیر ہے، یونیورسٹیاں اور اسپتال الگ ہیں، کیا یہ کام کسی ماضی کی حکومت نے کیے اور کیا کسی نے موٹر ویز بنائی، کون تھا جو ملک کو اندھیروں میں ڈبو گیا اور کون تھا جو روشنیاں واپس لایا۔

سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ خواہش تھی کہ وزیراعظم لاہور،، ملتان اور سکھر موٹر وے کا افتتاح کرتے مگر بنانے والوں نے تاخیر کردی، یہ منصوبے مئی 2018 میں مکمل ہونا تھے، میں ہوتا تو شاید تاخیر نہ ہوتی۔ نواز شریف نے مزید کیا کہا ویڈیو میں ملاحظہ کیجئے۔