سندھ میں صرف 35 فی صد پانی دستیاب ہے، سیکریٹری آبپاشی

کراچی میں پانی کی قلت کے مسئلے کو حل کیا جائے اور بدین اور ٹیل کے علاقوں میں پانی پہنچانے کی کوشش کی جائے، وزیراعلیٰ سندھ

پیر جون 14:50

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 جون2018ء) نگران وزیر اعلی سندھ فضل الرحمن کی زیرصدارت آبپاشی کے مسائل پر اجلاس ہوا،اجلاس میں بریفننگ دیتے ہوئے سیکرٹری آبپاشی نے کہا کہ سندھ میں صرف 35 فی صد پانی دستیاب ہے۔ اجلاس میں چیف سیکرٹری، سیکرٹری آبپاشی، سیکرٹری چیف منسٹر اوردیگر نے شرکت کی، اجلاس میں سندھ میں پانی کی قلت کے مسئلے پر غور کیا گیا۔

(جاری ہے)

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے نگراں وزیر اعلی سندھ فضل الرحمان نے کہا کہ کراچی میں پانی کی قلت کے مسئلے کو حل کیا جائے اور بدین اور ٹیل کے علاقوں میں پانی پہنچانے کی کوشش کی جائے۔سیکرٹری آب پاشی نے اجلاس میں بتایا کہ سندھ میں صرف 35 فیصد پانی دستیاب ہے، سندھ کو 36 ہزار 450 کیوسک پانی مل رہا ہے، تاہم 15 جون تک پانی کی صورت حال بہتر ہوجائے گی۔چیف سیکرٹری سندھ رضوان میمن نے بتایاکہ کراچی میں پانی کے مسئلے کو میں خود مانیٹر کر رہا ہوں، جہاں پانی کی قلت ہے وہاں ٹینکرز سے پانی پہنچایا جا رہا ہے۔