مشترکہ،جامع، سود منداور پائیدار سیکیورٹی نظریے ، نئی طرز کے عالمی تعلقات اور اتحاد تشکیل دینے کی بجائے شراکت داری کی حمایت کر تے ہیں ، چین

پیر جون 18:31

سنگاپور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 جون2018ء) چین نے کہا ہے کہ مشترکہ،جامع، سود منداور پائیدار سیکیورٹی نظریے کی حمایت کر تے ہیں ،تعاون اور مشترکہ مفادات کی مرکزی حیثیت سے نئی طرز کے عالمی تعلقات اور اتحاد تشکیل دینے کی بجائے شراکت داری کی حمایت کرتا ہے۔ چائنہ ریڈیو انٹرنیشنل کے مطابق سترہویں تین روزہ شنگریلا بات چیت سنگاپور میں اختتام پزیر ہو گئی ۔

چینی عوامی سپاہ آزادی کی ملٹری سائنس اکیڈمی کے نائب سربراہ حہ لیی کی سربراہی میں چینی وفد نے بات چیت میں شرکت کی۔حہ لیی نے اجلاس سے اپنے خطاب میں کہا کہ چین مشترکہ،جامع، سود منداور پائیدار سیکیورٹی نظریے کی حمایت کرتا ہے، تعاون اور مشترکہ مفادات کی مرکزی حیثیت سے نئی طرز کے عالمی تعلقات اور اتحاد تشکیل دینے کی بجائے شراکت داری کی حمایت کرتا ہے تاکہ ایشیا اور بحرالکاحلی علاقے میں سلامتی کی راہ متعین کرنے کے لیے تعمیری شمولیت،شراکت داری اور مشترکہ مفادات کے تحت اقدامات کیے جائیں۔

(جاری ہے)

اجلاس کے دوران چینی وفد نے مختلف ممالک کے نمائندوں کے ساتھ وسیع پیمانے پر تبادلہ خیال کیا،اہم موضوعات پر مشاورت کی اور چین کا موقف واضح کیا۔اجلاس کے دوران حہ لیی نے نیوزی لینڈ ،سنگاپور ،جنوبی کوریا اور سوئٹزر لینڈ سمیت متعدد ممالک اور تنظیموں کے دفاعی اور فوجی نمائندوں سے ملاقاتیں کی ۔اس کے ساتھ ساتھ جزیرہ نما کوریا کی صورتحال کو حالیہ شنگریلا بات چیت کے دوران نمایاں اہمیت دی گئی ہے۔

متعلقہ عنوان :