عراق: فرانسیسی خاتون کا داعش سے تعلق ، عدالت نے عمر قید کی سزاسنا دی

پیر جون 20:12

بغداد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 جون2018ء) عراقی عدالت نے فرانسیسی خاتون کو شدت پسند تنظیم داعش سے تعلق کے الزام میں عمر قید کی سزا سنا دی جو عراقی قوانین کے مطابق 20 سال پر محیط ہے۔ فرانس سے تعلق رکھنے والی میلینا بوغیدر نامی 27 سالہ خاتون، جو 4 بچوں کی ماں بھی ہیں، کو رواں برس فروری میں عراقی عدالت کی جانب سے ملک میں غیر قانونی طور پر داخل ہونے کے الزام میں 7 ماہ قید کی سزا سنائی گئی تھی۔

مذکورہ خاتون کی پہلی سزا پوری ہونے پر فرانس واپس بھیجا جانا تھا جس کے انتظامات بھی مکمل کر لیے گئے تھے، تاہم ایک اور عدالت نے انسدادِ دہشت گردی قانون کے تحت ان کے خلاف ٹرائل کا آغاز کیا اور انہیں داعش سے تعلق کے الزام میں عمر قید کی سزا سنادی۔میلینا بوغیدر نے عدالت کو فرانسیسی زبان میں بتایا کہ میں بے قصور ہوں، میرے شوہر نے مجھے دھوکا دیا اور بچوں سمیت چھوڑنے کی دھمکی دی، یہاں تک کہ میں اس کا پیچھا کرتے ہوئے عراق پہنچ گئی جہاں وہ ممکنہ طور پر داعش میں شمولیت اختیار کرنے کا جارہا تھا۔

(جاری ہے)

خاتون کا مزید کہنا تھا کہ میں داعش کے نظریے کی مخالفت کرتی ہوں،اور اپنے شوہر کے اس عمل کی بھی مذمت کرتی ہوں۔فرانسیسی خاتون کے عراقی وکیل نے عدالت پر زور دیا کہ ان کی موکلہ کو رہا کیا جائے کیونکہ اس نے اپنے شوہر کو ایک خاوند نہیں بلکہ جیلر کہا ہے جس نے اسے عراق میں آنے پر مجبور کیا۔خاتون کے فرانسیسی وکلا کی ٹیم نے کہا کہ انہیں اس بات کا علم ہوا کہ میلینا بوغیدر سزائے موت سے بچ گئی ہیں، لیکن پھر بھی وہ ان کو دی جانے والی عمر قید کی سزا کے خلاف اپیل دائر کریں گے۔۔