ڈاکٹر سلمیٰ کنڈی کی ایوب میڈیکل کالج کی بحیثیت ڈین تعیناتی غیرقانونی اقدام ہے، کاشف عباسی

پیر جون 20:50

ایبٹ آباد۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 جون2018ء) پاکستان مسلم لیگ (ن) کے سینئر رہنما سردار مہتاب احمد خان عباسی کے داماد کاشف عباسی نے کہا ہے کہ ڈاکٹر سلمیٰ کنڈی کی ایوب میڈیکل کالج کی بحیثیت ڈین تعیناتی غیرقانونی اقدام ہے، ان کے پاس اس عہدے کیلئے مطلوبہ قابلیت اور تجربہ نہیں ہے کیونکہ ڈین کے عہدے پر تعیناتی کیلئے بطور ایچ او ڈی 7 سالہ تجربہ ضروری ہے۔

ڈاکٹرسلمیٰ کنڈی کو 2014ء میں ایچ او ڈی بنایا گیا تھا۔ ڈاکٹر سلمیٰ کنڈی کی تعلیمی قابلیت صرف ایم ایس سی ہے جبکہ ڈین کے عہدے پر تعیناتی کیلئے تعلیمی قابلیت پی ایچ ڈی ہونا لازمی ہے۔ وہ سوموار کو صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ قائمقام ڈین کی تعیناتی کیلئے بورڈ آف گورنر کی تین ماہ کے اندر میٹنگ کے دوران منظوری لی جاتی ہے، اگر بی او جی اس کی منظوری دے تو پھر قائمقام ڈین کو تعینات کیا جاتا ہے لیکن ایوب میڈیکل کالج و کمپلیکس کی بدقسمتی ہے کہ یہاں پر اکثریتی عہدے پر ایڈہاک بنیادوں یعنی تین ماہ کے دورانیہ پر لوگوں کو تعینات کیا گیا ہے اور ایڈہاک بنیادوں پر تعینات لوگ سالوں سے کام کر رہے ہیں اور ان کو کوئی پوچھنے والا نہیں ہے۔

(جاری ہے)

مختلف عہدوں پر امیدواروں سے ٹیسٹ لئے جا چکے ہیں لیکن ان کو انٹرویو کیلئے اس وجہ سے نہیں بلایا جا رہا ہے کیونکہ اگر ایڈہاک عہدوں پر مستقل تعیناتیاں کر دی گئیں تو پھر اس ڈاکٹر مافیا کا کیا بنے گا جو مطلوبہ معیار پر پورا ہی نہیں اترتے۔ کاشف عباسی کا مزید کہنا تھا کہ پی ٹی آئی کی حکومت نے میرٹ اور انصاف کی دھجیاں بکھیری ہیں اور اہم عہدوں پر نااہل لوگوں کی تعیناتیاں کر کے اداروں کو تباہ کیا گیا ہے۔

متعلقہ عنوان :