سابق وزیراعلی بلوچستان اور اپوزیشن لیڈر کے درمیان نگران وزیراعلی کے نام پر اتفاق نہ ہوسکا

حکومتی اور اپوزیشن ارکان کا تین تین نام پارلیمانی کمیٹی کو بھجوانے کا فیصلہ

پیر جون 21:11

کوئٹہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 جون2018ء) سابق وزیراعلی بلوچستان اور سابقہ اپوزیشن لیڈر کے درمیان بلوچستان کے نگران وزیراعلی کے نام پرآخر کار اتفاق رائے نہیں ہوسکا ،حکومتی ارکان اور اپوزیشن کی جانب سے تین تین نام پارلیمانی کمیٹی کو بھیجنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ،تاکہ آئندہ دو دن کے اندر وہ نگران وزیراعلی کا فیصلہ کرسکے ،اگر پارلیمانی کمیٹی بھی نگران وزیراعلی کا فیصلہ نہیں کرسکی تو آخر کا ر الیکشن کمیشن کو نگران وزیراعلی کے نام بھیجا جائیگا ذرائع کے مطابق نگران وزیراعلی کا معاملہ اسپیکر بلوچستان اسمبلی راحیلہ حمید خان درانی کی جانب سے قائم کردہ 6رکنی پارلیمانی کمیٹی کے سپرد کیا گیا ہے جس میں حکومت کی جانب سے سابق وزیراعلی بلوچستان میر عبدالقدوس بزنجو ،سابق صوبائی وزیر داخلہ میر سرفراز بگٹی ،سابق صوبائی وزیر شیخ جعفر خان مندوخیل جبکہ اپوزیشن کی جانب سے سابقہ اپوزیشن لیڈر عبدالرحیم زیارتوال ،سابق وزیراعلی ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ اور سابقہ اپوزیشن لیڈرمولانا عبدالواسع کے نام دیئے گئے ،پارلیمانی کمیٹی دو روز میں نگراں وزیراعلی کا فیصلہ کرے گی اور اگر پارلیمانی کمیٹی بھی نگران وزیراعلی کے نام کا فیصلہ کرنے میں کامیاب نہ ہوسکے تو آخر کار الیکشن کمیشن آف پاکستان بلوچستان کے نگران وزیراعلی کے انتخاب کا فیصلہ اپنے اختیارات استعمال کرتے ہوئے کریں گے ،،بلوچستان کے نگراں وزیراعلی کے انتخاب کے بعد 6رکنی نگران صوبائی کابینہ کا انتخاب بعد میں کیاجائیگا ،سابق وزیراعلی بلوچستان میر عبدالقدوس بزنجو نے اپنا ذاتی سامان وزیراعلی اینکسی سے اپنی ذاتی گھر منتقل کروانا شروع کردیا ہے۔