قصور ریلی میں شامل افراد نے عسکری قیادت اور عدلیہ مخالف تقاریز کیں ،گواہ کا بیان

لاہورہائیکورٹ نے ملزم ناصر خان اور جمیل کی معافی سے متعلق سپریم کورٹ کا حکم نامہ طلب کر لیا

پیر جون 21:32

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 جون2018ء) قصور میں عدلیہ مخالف ریلی اور نعرے بازی کیخلاف لاہور ہائی کورٹ میں دائر کیس میں گواہ نے بیان قلمبند کرواتے ہوئے بتایا کہ ریلی میں شامل افراد نے عسکری قیادت اور عدلیہ مخالف تقاریر کیں۔گزشتہ روز لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے عدلیہ مخالف ریلی اور نعرے بازی کے خلاف کیس کی سماعت کی۔

(جاری ہے)

ملزمان میں سابق ایم این اے شیخ وسیم، سابق ایم پی اے نعیم صفدر، جمیل خان، ناصر خان، احمد لطیف اور حاجی ایاز شامل ہیں۔اس موقع پر عدالت نے ملزم ناصر خان اور جمیل کی معافی سے متعلق سپریم کورٹ کا حکم نامہ طلب کیا۔کیس کی سماعت کے دوران عبدالرحمن نامی شہری گواہ نے عدالت میں پیش ہو کر اپنا بیان قلمبند کروایا، جس کے بعد فریقین کے وکلا نے عبدالرحمن کے بیان پر جرح مکمل کی۔کیس میں پیش کیے گئے گواہ کے مطابق ریلی میں شامل افراد نے عسکری قیادت اور عدلیہ مخالف تقاریر کیں۔بعد ازاں عدالت نے سماعت آج 5جون تک کے لیے ملتوی کر دی۔