کوئٹہ، بلوچستان میں حلقہ بندیاں صحیح نہ ہوئی تو خونریزی کا خطرہ ہے، انجینئر زمرک خان اچکزئی

دھاندلی سے انتخابات مشکوک ہو جائیں گے، انتخابات کی تاخیر کی حق میں نہیں ہو حکومت اور ادارے انتخابات کو پرامن انعقاد کے کے لئے اپنا کردا رادا کرے،عوامی نیشنل پارٹی کے سابقہ پارلیمانی لیڈر

پیر جون 22:44

کوئٹہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 جون2018ء) عوامی نیشنل پارٹی کے سابقہ پارلیمانی لیڈر انجینئر زمرک خان اچکزئی نے کہا ہے کہ بلوچستان میں حلقہ بندیاں صحیح نہ ہوئی تو خونریزی کا خطرہ ہے دھاندلی سے انتخابات مشکوک ہو جائیں گے انتخابات کی تاخیر کی حق میں نہیں ہو حکومت اور ادارے انتخابات کو پرامن انعقاد کے کے لئے اپنا کردا رادا کرے ان خیالات کا اظہا رانہوں نے میڈیا سے بات چیت کر تے ہوئے کیا انہوں نے کہا ہے کہ امید ہے کہ انتخابات صاف شفاف وپرامن ہو نگے نئی حلقہ بندیوں کی وجہ سے ابہام پیدا ہوا ہے حلقہ بندیوں میں نمائندوں کی تجاویز نظرانداز کی گئی ہمیں پتہ نہیں کہ کونسے نمبر کیساتھ اپنا فارم داخل کرائے حلقہ بندیاں صحیح نہ ہوئے تو عام انتخابات میں خونریزی کا خطرہ ہے دھاندلی سے الیکشن مشکوک ہوجائینگے عوامی نیشنل پارٹی کسی بھی صورت انتخابات کی تاخیر کے حق میں نہیں ہے تا ہم جس دن اسمبلی میں قرارداد پیش ہوئی صرف اس بنیاد پر حمایت کی کہ اس وقت بلوچستان میں حلقہ بندیوں سے متعلق کیسز عدالتوں میں ہے اس لئے تمام تر حالات کومد نظر رکھ کر فیصلہ کیا جائے انہوں نے کہا ہے کہ اگر عام انتخابات میں دھاندلی ہوئی تو انتخابات مشکوک ہو جائینگے بلوچستان ایک قبائلی صوبہ ہے یہاں انتخابات میں جھگڑوں کا خطرہ رہتاہے حکومت اور ادارے انتخابات کے پرامن انعقاد کے لئے اپنا کردا رادا کرے عوامی نیشنل پارٹی نے ہمیشہ جمہوریت کی بالادستی کے لئے جدوجہد کی ہے اور عوامی نیشنل پارٹی نی2013 کے انتخابات میں جو قربانیاں دی ہے کوئی بھی ان کا تصورنہیں کر سکتا ہم جمہوری لوگ ہے اور جمہوری نظام پر یقین رکھتے ہیں اس لئے عوام کو اس بار حقیقی نمائندوں کو موقع دینا چا ہئے جو حقیقی معنوں میں عوام کی خدمت کر سکے ۔