سیالکوٹ،شہر بھر میں صفائی کی ناقص صورتحال،سیوریج کا نظام درہم برہم،شہری حلقوں کا حکومت سے نوٹس لینے کا مطالبہ

پیر جون 23:38

سیالکوٹ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 جون2018ء) شہر بھر میں صفائی کی ناقص صورتحال،سیوریج کا نظام درہم برہم،شہری حلقوں کا حکومت سے نوٹس لینے کا مطالبہ ۔ تفصیلات کے مطابق سیالکوٹ اور گردو نواح کے علاقوں میں گندگی کے ڈھیر لگے ہوئے ہیں۔شہر کی معروف شاہراہوں پیرس روڈ،کچہری روڈ،کمشنر روڈ،خادم علی روڈ،لہائی بازار،خواجہ صفدر روڈ، تحصیل بازار،کشمیر روڈ،ھاجی پورہ روڈ،شہابپورہ روڈ،سرکلر روڈ،پل ایک نیکا پورہ،پل ایک ڈسکہ روڈ،ڈیفنس روڈ پر گھومتے اور سبزی و پھل فروش کی دوکانوں اور ریڑھیوں سے غنڈوں کی طرح سامان اٹھا کر کھا جاتے ہیں شہر میں پانچ سو سے زائد مقامات پر شہریوں نے خود ساختہ فلتھ ڈپو قائم کر رکھے ہیں اور وہا ں پر پڑا کچرا اور گندگی ٹی ایم اے اٹھانے سے قاصر ہے ٹی ایم اے سیالکوٹ کے خاکروبوں کی موج ظفر ہر گلی اور محلہ میں صفائی کے لئے ہفتہ وار چندہ وصول کرتی ہے اور اگر کوئی شخص چندہ دینے سے قاصر ہو تو پورے محلے کا کچرا اس کے گھر کے سامنے پھینک دیا جاتا ہے اور جس محلے کے لوگ چندہ کے بغیر صفائی کا مطالبہ کریں وہاں پر خاکروب نام کی کوئی چیز نظر نہ آتی ہے جبکہ سیالکوٹ شہر کے گنجان آباد علاقوں پورن نگر،محمد پورہ،کریم پورہ،پاک پورہ،رنگ پورہ،نشاط پارک،انور سٹریٹ،پریم نگر،نیکا پورہ، کشمیری محلہ،پکا گڑھا،بونکن،اسلام پورہ،حاجی پورہ،،بجلی محلہ،فتح گڑھ،کوٹلی بہرام،ہاشم پورہ،بوگڑھا،شفیع دا بھٹہ،کچا شہابپورہ،احمد پورہ،پورہ ہیراں،کشمیر ی محلہ،امام صاحب،حاجی پورہ بن،میانہ پورہ،مبارک پورہ،دھارووال ،بابے بیری،ماڈل ٹائون،میں صفائی کی صورتحال انتہائی ناگفتہ بہ ہو چکی ہے ۔

(جاری ہے)

جگہ جگہ گندگی کے ڈھیر اور غلاظت کے باعث تعفن پھیل رہا ہے جبکہ سیوریج سسٹم بھی مکمل طور پر تباہ وبرباد ہو چکا ہے۔ شہریوں کا کہنا کہ متعدد بار حکام بالا کویاد دہانیاں کروانے اور باقاعدہ درخواستیں دینے کے باوجود بھی صفائی کی صورتحال کوعملی جامہ نہیں پہنایا گیا جبکہ وی آئی پیز کے روٹ کے لئے استعمال ہونے والی شہر کی اہم شاہراہوں پر صفائی ستھرائی کی جاتی ہے جبکہ دیگر علاقے مسائلستان بن چکے ہیں۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ منتخب نمائندوں نے کبھی بھی شہر میں سیوریج کے نظام کو بہتر بنانے کے لئے کوئی اقدام نہیں کیا جس کی وجہ سے شہرکی ہر گلی کی نکڑ میں موجود گندگی کے یہ ڈھیر ایک عفریت بن چکے ہیں دوسری طرف ٹی ایم اے کی ٹرالیاں گندگی اور کچرا اٹھا کر لے جاتے وقت ٹرالی کو ڈھانپنے کا کوئی مناسب انتظام نہ کئے جا نے کی وجہ سے گندگی شاہرات پر بکھریتی ہوئی گزرتی ہیں جس کی بنا پر عوام انتہائی پریشانی کے عالم میں زندگی گزارنے پر مجبور ہیں۔شہریوںنے حکومت سے فوری نوٹس لینے کی اپیل کی ہے ۔

متعلقہ عنوان :