جوئے کے عادی بچے نے باپ کے سوا کروڑ روپے جوئے میں اڑا دئیے

13 سالہ بچے نے اپنے والد کے تجارتی کریڈٹ کارڈز سے لگ بھگ 80 ہزار برطانوی پاؤنڈ آن لائن جوئے میں خرچ کردیئے

Syed Fakhir Abbas سید فاخر عباس پیر جون 23:40

جوئے کے عادی بچے نے باپ کے سوا کروڑ روپے جوئے میں اڑا دئیے
لنکا شائر (اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار-04 جون 2018ء) :جوئے کے عادی بچے نے باپ کے سوا کروڑ روپے جوئے میں اڑا دئیے۔ 13 سالہ بچے نے اپنے والد کے تجارتی کریڈٹ کارڈز سے لگ بھگ 80 ہزار برطانوی پاؤنڈ آن لائن جوئے میں خرچ کردیئے۔تفصیلات کے مطابق پیسے کا لالچ بسا اوقات انسان کو اتنا اندھا کر دیتا ہے کہ وہ یہ بھی نہیں دیکھ پاتا کہ وہ کیا کر رہا ہے اور اسکے نتائج کیا نکل سکتے ہیں۔

پیسے کی حرص اور لالچ ایک ایسی چیز ہے جو عمر ،مذہب اور طبقے سے بالا ترہے ۔پیسے کی لاچ میں بسا اوقات انسان اپنا ہی نقصان کر بیٹھتا ہے اور ایسا ہی انوکھا واقعہ برطانیہ کے علاقے لنکا شائر میں پیش آیا جہاں جوئے کے عادی بچے نے باپ کے سوا کروڑ روپے جوئے میں اڑا دئیے۔ لنکاشائر سے تعلق رکھنے والے اسکول کے اس بچے نے ویمبلے فٹ بال میچ کے درمیان دکھائی دینے والے آن لائن سٹے بازوں کے اشتہارات دیکھ کر اپنی قسمت آزمانے کا فیصلہ کیا اور اپنے والد کی شناخت استعمال کرتے ہوئے انہی کے کریڈٹ کارڈزسے جوئے میں اندھا دھند رقم لگانی شروع کردی۔

(جاری ہے)

رفتہ رفتہ وہ کھیلوں میں جوئے کا عادی ہوگیا اور ہر ہفتے فٹبال اور گھڑسواری پر رقم لگانا شروع کردی اور اپنی عمر 18 برس ظاہر کرتے ہوئے بری عادت شروع کردی۔والدین کی جانب سے اس عادتِ بد کے انکشاف کے بعد اسے ماہرِ نفسیات کے پاس لے جایا گیا تاکہ وہ یہ خوفناک لت ترک کرسکے۔ اس خبر کے بعد برطانوی سرکاری اداروں نے بتایا ہے کہ ملک میں 11 سے 16 برس کے 25000 بچے اس وقت آن لائن جوئے اور سٹے میں ملوث ہیں۔ اس کے بعد حکومتی نمائندوں نے بچوں کو جوئے کے اشتہارات سے دور رکھنے کےلیے سخت قانون سازی پر زور دیا ہے۔ تاہم کئی وجوہ کی بنا پر اس بچے کی شناخت اور نام ظاہر نہیں کیا جارہا۔

متعلقہ عنوان :