احتساب عدالت نے نواز شریف کیخلاف فیصلہ سنا دیا

نیب ریفرنسز،نواز شریف کی حتمی دلائل ایک ہی بار سننے کی درخواست مسترد ملزم اس فیصلے کے خلاف ہائیکورٹ چلے جائیں، اس دوران ہم العزیزیہ ریفرنس میں واجد ضیا کو بلالیتے ہیں،جج محمد بشیر

منگل جون 12:08

احتساب عدالت نے نواز شریف کیخلاف فیصلہ سنا دیا
․اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 05 جون2018ء) احتساب عدالت نے سابق وزیراعظم نوازشریف کی نیب ریفرنسز میں حتمی دلائل ایک ہی بار سننے کی درخواست مسترد کر تے ہوئے کہا ہے کہ ملزم اس فیصلے کے خلاف ہائیکورٹ چلے جائیں، اس دوران ہم العزیزیہ ریفرنس میں واجد ضیا کو بلالیتے ہیں۔ منگل کو احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے ایون فیلڈ ریفرنس کی سماعت کی جس کے دوران نواز شریف کی جانب سے متفرق درخواست دائر کی گئی۔

درخواست میں استدعا کی گئی کہ ایون فیلڈ ریفرنس کے علاوہ دیگر 2 ریفرنسز میں واجد ضیا اور تفتیشی افسر کے بیانات مکمل ہونے تک حتمی دلائل مخر کیے جائیں اور تمام ریفرنسز میں ایک ساتھ حتمی دلائل سنے جائیں۔۔عدالت نے تمام گواہوں کے بیانات ریکارڈ کرنے تک نواز شریف کی درخواست مسترد کردی۔

(جاری ہے)

فاضل جج محمد بشیر نے قرار دیا کہ ملزم اس فیصلے کے خلاف ہائیکورٹ چلے جائیں، اس دوران ہم العزیزیہ ریفرنس میں واجد ضیا کو بلالیتے ہیں۔

سماعت کے دوران نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث کی جگہ معاون وکیل سعد ہاشمی پیش ہوئے، جنہوں نے استدعا کی کہ پانچ منٹ دیے جائیں تاکہ وہ خواجہ حارث سے ہدایات لے لیں۔۔عدالت نے نوازشریف کے معاون وکیل سعد ہاشمی کی استدعا منظور کرتے ہوئے سماعت میں 15 منٹ کا وقفہ کردیا۔متفرق درخواست پرنواز شریف کے معاون وکیل سعد ہاشمی کے مطابق درخواست میں مقف اختیار کیا گیا ہے کہ تمام ریفرنسز میں جے آئی ٹی رپورٹ کے یکساں والیم پیش کیے گئے، نیب کی یہ بات درست نہیں کہ تمام ریفرنسز کے حقائق مختلف ہیں۔وکیل سعد ہاشمی کے مطابق مرکزی گواہ واجد ضیا سمیت بعض گواہان بھی مشترک ہیں جب کہ نیب کی جانب سے ہر ریفرنس میں گلف اسٹیل ملز اور قطری خط لایا گیا ہے۔