سعودی عرب بھی مسلمانوں کو لوٹنے کے معاملے میں پیچھے نہ رہا، رمضان کے آخری عشرے میں مکہ کا رخ کرنے والوں کیلئے بری خبر

سعودی عرب کے مکی ہوٹلوں کے کرایوں میں 80 فیصد اضافہ، آخری عشرہ میں 700 ملین ریال کی آمدنی متوقع

منگل جون 13:00

سعودی عرب بھی مسلمانوں کو لوٹنے کے معاملے میں پیچھے نہ رہا، رمضان کے ..
مکہ مکرمہ ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 05 جون2018ء) سعودی عرب کے شہر مکہ مکرمہ، خصوصاً مسجد الحرام کے اطراف واقع ہوٹلوں اور فرنشڈ پارٹمنٹس کے کرایوں میں شعبان کے مقابلے میں 80 فیصد اضافہ ہوا ہے۔۔سعودی اخبار کے مطابق رمضان کے آخری عشرے میں حرم کے رخ والے ایک کمرے کا کرایہ 1500 ریال اور حرم سے مختلف جہت میں رخ والے کمروں کا کرایہ 800 سے ایک ہزار ریال تک ہوچکا ہے۔

(جاری ہے)

ہوٹلوں کے امور سے تعلق رکھنے والوں نے توقع ظاہر کی ہے کہ مکہ مکرمہ میں فرنشڈ اپارٹمنٹس اور ہوٹلوں کے مالکان کو آخری عشرہ میں 700 ملین ریال تک کی آمدنی ہوگی۔ ان میں سے 70 فیصد حرم شریف کے اطراف کے ہوٹلوں اور اپارٹمنٹس کے مالکان کے حصہ میں آئے گی۔ ہوٹلوں کے ایک مالک ہانی الھدلی نے میڈیا کو بتایا کہ ہوٹلوں کے کرائے کا تعین حرم شریف سے فاصلے پر طے ہورہا ہے۔ 900 سے 1500 ریال ایک دن کا کرایہ ایسے کمرے پر لیا جارہا ہے جس کا رخ حرم شریف کی طرف ہے برعکس شکل میں 800 تا 1200 ریال ایک دن کا کرایہ ہے۔ مکہ مکرمہ کے تمام ہوٹل بک ہوچکے ہیں۔