یمن ،حوثی باغی الحدیدہ سے مشروط طورپر انخلاء کے لیے تیار

الحدیدہ بندرگاہ کا کنٹرول اقوام متحدہ کے پاس،نکلنے والے جنگجوئوں کو گرفتارنہیں کیاجائیگا،شرط

منگل جون 13:22

صنعائ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 05 جون2018ء) یمن کے مصدقہ سیاسی ذریعے نے انکشاف کیا ہے کہ ایران نواز حوثی باغی ساحلی شہر الحدیدہ سے مشروط طورپر نکلنے کے لیے تیار ہوگئے ہیں۔عرب ٹی وی کے مطابق حوثی باغیوں کی طرف سے الحدیدہ سے انخلاء کے لیے شرائط اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی مارٹن گریویتھ کے سامنے پیش کی گئی ہیں جنہوں نے گذشتہ روز صنعاء کا دورہ کیا تھا۔

(جاری ہے)

ذرائع کا کہنا تھا کہ حوثیوں نے انخلاء کے لیے شرط رکھی ہے کہ الحدیدہ بندرگاہ کا کنٹرول آئینی حکومت کے بجائے اقوام متحدہ کے کنٹرول میں ہوگا۔ الحدیدہ کے راستے حوثی باغیوں کے لیے آنے والے سامان کو روکا نہیں جائے گا۔ آئینی حکومت تمام سرکاری ملازمین کی تنخواہیں ادا کرنے کی ذمہ داری قبول کرے گی۔ عرب اتحادی فوج بمباری بند کرتے ہوئے امن بات چیت کا آغاز کرے گی۔ اس کے ساتھ ساتھ الحدیدہ میں جنگ بندی کی مکمل ضمانت فراہم کی جائے گی اور وہاں سے نکلنے والے جنگجوؤں اور ان کے اقارب کو گرفتار نہیں کیا جائے گا۔ اس کے علاوہ باغیوں نے اقوام متحدہ کے ایلچی سے مطالبہ کیا کہ وہ باغیوں کی قائم کردہ سپریم پولٹیکل کونسل کے سربراہ الصماد کے قتل کی مذمت کریں۔