اردن میں ہردوسرا شخص سگریٹ نوشی کرتا ہے،عالمی ادارہ صحت

منگل جون 15:25

جنیوا ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 05 جون2018ء) عالمی ادارہ صحت کی طرف سے جاری کردہ ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ اردن کی نصف آبادی سگریٹ نوشی کی عادی ہے اور ملک میں ہر دوسرا شخص سیگریٹ نوشی کرتا ہے۔عالمی ذرائع ابلاغ کے مطابق انسانی حقوق کی عالمی تنظیم کی طرف سے سال 2018ء میں سگریٹ نوشی کے حوالے سے ایک رپورٹ جاری کی گئی ہے۔

(جاری ہے)

’تمباکو نوشی اور امراض قلب‘ کے عنوان سے جاری اس رپورٹ میں اردن کو سیگریٹ نوشوں کا ملک قرار دے کر اس کے تباہ کن اثرات پر بھی خبردار کیا گیا۔

رپورٹ میں دنیا کے دوسرے خطوں میں تمباکو نوشی کے اعدادو شمار بھی جاری کیے گئے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق اردن میں ہونے والی اموات کا 12 فی صد سگریٹ نوشی کا نتیجہ ہیں۔ تمباکو نوشی سے 34 فیصد اموات سانس کی بیماریوں کے لاحق ہونے سے ہوتی ہیں۔ 18 فی صد امرض قلب اور 13 فی صد خون کی شریانوں کی بیماریوں سے واقع ہوتی ہیں۔

متعلقہ عنوان :