الیکشن نعروں کا نہیں کارکردگی اور تسلسل کا ہوگا‘

عمران اور ریحام کے آپس کے معاملات ہیں ہمارا کیا لینا دینا ‘احسن اقبال

منگل جون 15:42

الیکشن نعروں کا نہیں کارکردگی اور تسلسل کا ہوگا‘
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 05 جون2018ء) سابق وزیر داخلہ احسن اقبال نے کہا ہے کہ کہ اب الیکشن نعروں کا نہیں بلکہ کارکردگی اور تسلسل کا ہوگا‘ عمران اور ریحام کے آپس کے معاملات ہیں ہمارا کیا لینا دینا ہے، ہر غیر ضروری بات کا نوٹس لے کر اسے اجاگر کرنے کی ضرورت نہیں، جو بھی مناسب ہوگا کارروائی کریں گے‘ریحام خان نے عمران خان سے شادی مجھے سے پوچھ کر تو نہیں کی ‘نگران وزیراعلی کے حوالے سے عمران خان کے یوٹرن ان کی ناہلی اور اناڑی پن کا ثبوت ہیں لہٰذا وہ ثابت کرچکے کہ ملک کی قیادت کے اہل نہیں ہیں، اگلا الیکشن نعروں کا نہیں کارکردگی ،تسلسل کا ہوگا، اگر کوئی اناڑی آگیا تو ترقی کے عمل کو رول بیک کردے گا ۔

لاہور ہائیکورٹ کے احاطہ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے احسن اقبال نے کہا کہ ملک کی 3 بڑی جماعتوں کی کارکردگی کے لیے ایک دن کراچی،، لاہور اور پشاور میں قیام کرکے دیکھ لیا جائے، ایک دن ان شہروں میں قیام سے پتا چل جائے گا کون سی جماعت ملک کوترقی دینے کی صلاحیت رکھتی ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ پورا پشاور شہر کھنڈر اور کراچی گندگی کا ڈھیر بن چکا ہے، پنجاب اور لاہور کی ترقی کو دنیا سراہتی ہے، الیکشن میں خیبرپختونخوا،، سندھ اور بلوچستان کے عوام بھی (ن) لیگ کو ووٹ دیں گے۔

احسن اقبال نے کہا کہ اگلا الیکشن نعروں کا نہیں بلکہ کارکردگی اور تسلسل کا ہوگا، پاکستان کو تسلسل کی ضرورت ہے، ہم نے جو منصوبے شروع کیے انہیں مکمل کرنے کی ضرورت ہے، ہم نے سی پیک کی بنیاد رکھی ہے، اسی کی بنیاد پر عمارت کھڑی رہنے کی ضرورت ہے، خدانخواستہ کوئی تبدیلی ہوگی تو اربوں ڈالرکے ترقیاتی منصوبے رک جائیں گے، اگر کوئی اناڑی آگیا تو ترقی کے عمل کو رول بیک کردے گا ریحام خان سے متعلق سوال پر کہا کہ ریحام نے مجھ سے پوچھ کر شادی تو نہیں کی تھی، عمران اور ریحام کے آپس کے معاملات ہیں ہمارا کیا لینا دینا ہے، ہر غیر ضروری بات کا نوٹس لے کر اسے اجاگر کرنے کی ضرورت نہیں، جو بھی مناسب ہوگا کارروائی کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان کی نااہلی، ناقص کارکردگی اور اناڑی پن کے مظاہرے 3 دن میں سامنے آگئے، نگران وزیراعلی کے حوالے سے عمران خان کے یوٹرن ان کی ناہلی اور اناڑی پن کا ثبوت ہیں، عمران ثابت کرچکے کہ ملک کی قیادت کے اہل نہیں ہیں، ان کا اناڑی پن انہیں انتخابات میں شکست دینے کے لیے کافی ہے۔