بلوچستان کے حالات خراب کرنے کیلئے بعض ہمسایہ ممالک سازشیں کررہے ہیں،منظور خان کاکڑ

منگل جون 18:30

کوئٹہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 05 جون2018ء) بلوچستان عوامی پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری سابق صوبائی وزیر منظور خان کاکڑ،مرکزی رہنماء سینیٹر نصیب اللہ بازئی ،پارٹی آرگنائزر ملک خدائے بخش لانگونے کہا ہے کہ بلوچستان کی حالات خراب کرنے کیلئے بعض ہمسایہ ممالک سازشیں کررہی ہے جس سے سویلین اور سیکورٹی ادارے ملکر اس سازشوں کو ماضی کی طرح ایک بار پھر ناکام بنائینگے دہشتگردی کے پیچھے وردی نہیں نام نہاد دہشتگرد ہے، غلط راستے پر جانے اور چند ٹکوں کی خاطر ملک کیخلاف سازشیں کرنیوالے واپس آکر ہمارے صفوں میں شامل ہو جائے ،پشتونوںکی رہنمائی کرنیوالوںنے تمام مفادات اپنے خاندان تک محدود کئے ،پہلے غلام کی حیثیت سے سیاست کررہے تھے آج بلوچستان کی سطح پر خود مختار جماعت بنا کر اپنے حقوق حاصل کرنے کیلئے بھرپور جدوجہد کرینگے ،یہ بات انہوں نے منگل کے روز ممتاز قبائلی رہنماء عتیق الرحمن کاکڑ کی خاندان سمیت بلوچستان عوامی پارٹی میں شمولیت کے موقع پر کوئٹہ پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی، انہوں نے کہاکہ مسلم لیگ (ن) کی حکومت میں بھی ہم نے بلوچستان کے حقوق حاصل کرنے کیلئے خاموشی کی بجائے آواز بلند کی لیکن افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ انہوں نے نہ پہلے بلوچستان کے مسائل پر توجہ دی اور نہ ہی ہمارے ہوتے ہوئے ،انہوں نے اقدامات کیے یہی وجہ ہے کہ بلوچستان اگر چہ رقبے کے لحاظ سے ایک بہت بڑا صوبہ ہے لیکن دوسری جانب وفاقی حکومت کا نظر انداز ہونے کے باعث پسماندگی کا شکار ہے ،انہوں نے کہاکہ ہم نے غلامی کی زنجیریں توڑ دئیے اور بلوچستان کی سطح پر ایک ایسی جماعت بنائی جو خود مختار اور ڈٹ ہو کر بلوچستان کے حقوق حاصل کرنے کیلئے جدوجہد کرینگے ،انہوں نے کہاکہ ہم فیڈریشن کو کمزور نہیں بلکہ مضبوط بنائینگے لیکن پھر فیڈریشن کو بھی بلوچستان کے حقوق دینا ہوگا ،انہوں نے کہاکہ بعض جماعتوں نے نوجوانوں کو زندہ باد اور مردہ باد تک محدودکیا ہے اورچچا،ماما کے لوگوں کو آگے لاکر ان کو مراعات دے رہے ہیں ہم غریب طبقے کو آگے لاکر ان کے مسائل حل کرینگے ،انہوں نے کہاکہ افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ اس وقت بلوچستان سے گیس نکلتی ہے لیکن بلوچستان کے اکثر علاقے اس قدرتی نعمت سے بھی محروم ہے بلکہ اس وقت بلوچستان میں پینے کی پانی کا بھی قلت ہے ،انہوں نے کہاکہ سابقہ حکومت جس میں قوم پرست شامل تھے انہوں نے تعلیم اور صحت کو اولین ترجیح قراردیا لیکن جب اقتدار میں آکر تو انہوں نے تعلیم کیلئے کچھ نہیں کیا ،انہوں نے کہاکہ ہم اقتدار میں آکر شفافیت ،چیک اینڈ بیلنس تعلیم صحت کی بہتری اور اداروں کی مضبوطی کیلئے اقدامات کرینگے ،انہوںنے کہاکہ ہم اپنے اداروں پر فخر کرتے ہیں جنہوں نے ہمیشہ دہشتگردوں کیخلاف آپریشن کرکے کامیابی حاصل کی بلکہ سرحدوں کی حفاظت بھی صحیح طریقے سے سرانجام دے رہے ہیں ہم نے کبھی انڈیا ،اسرائیل اور دیگر ممالک کے فوج کی حمایت نہیں کی بلکہ ان کی مخالفت کی اپنے فوج کی حمایت کی اس حوالے سے ہمیں کوئی غدار کہتے ہیں تو ہمیں قبول ہیں،منظور خان کاکڑ نے کہاکہ اس وقت بلوچستان سمیت پورے ملک سمیت پانی کا جو بحران پیدا ہوگیا ہے اور کالا باغ ڈیم بنانے کا مسئلہ سپریم کور ٹ میں زیر سماعت ہے جو بھی فیصلہ کرے گی ہمارے لئے قابل قبول ہے ،انہوں نے کہاکہ ایک قوم پرست جماعت نے صرف مفادات پشتونوں کے نام پر اپنے خاندان تک محدود رکھا اور ایسے شخص کو گورنر بنایا جس کا پشتونخواملی عوامی پارٹی سے کوئی تعلق تھا اور نہ ہی کبھی وہ پارٹی میں رہا اس کو گورنر لگادیا ۔

(جاری ہے)

انہوں کہاکہ کوئٹہ ڈسٹرٹ میں 28ڈیم بنانے کا فیصلہ اور ایک قوم پرست جماعت نی50ارب روپے حاصل کئے مگر وہ پارٹی پر صرف کئے ہوں گے معلوم نہیں بلکہ اپنے ذات پر ضرور خرچ کئے ہوں گے ،انہوں نے کہاکہ آنیوالا وقت یوتھ کا ہوگا ہم اس کو روزگار دیں گے ،ہم باشعور ہوچکے ہیں انہیں زبانی جمع خرچ سے نہیں بھلایا جاسکتا ،ہماری فورسز جن میں فوج ،ایف سی ،پولیس ،سولین ،صحافی ،ڈاکٹر اور وکلاء نے ملک کی خاطر بے شمار قربانیاں دی ہیں جنہیں ہمیشہ یاد رکھا جائیگا ،انہوں نے کہاکہ ملک دشمن عناصر جو پاکستان سمیت بلوچستان کو نقصان پہنچانتے ہیں وہ اپنے مقصد میں کبھی بھی کامیاب نہیں ہوسکیں گے ،فو ج کا کام سرحدوں کی حفاظت اور ملک کے اندر امن وامان کو برقرار رکھنا ہے جبکہ سیاستدان اپنا کام کرتے ہیں ہر ادارہ اگر اپنا کام کریں تو کوئی وجہ نہیں کہ پاکستان ترقی نہ کرسکے انشاء اللہ اگر عوام نے ہمیں موقع دیا تو ہم اقتدار میں آکر خاص کر یوتھ کو روزگار دیں گے کیونکہ اگر آپ کسی کوروزگار نہیں دیں گے وہ مطمنئن نہیں ہوگا ،پاک فوج نے دہشتگردوں کیخلاف سخت کاروائی کی جنہوں نے وانہ ،بلوچستان اور دیگر علاقوں میں جب ہمارے ہمسائیہ ممالک سے بھیجے گئے دہشتگروں کا خاتمہ کیلئے ہماری فوج نے اپنی جانوں کا نظرانہ دیکر امن وامان برقرار رکھا گیا ،سینیٹر نصیب بازئی نے کہاکہ قوم پرستوں نے صرف اپنے پیٹ بھر یں ،بلوچستان کے عوام کو ترقی کے نام پر لوٹا گیا اور ترقی اپنے گھر تک رکھی جس سے عوام میں مایوسی پھیل گئی جب تک ہم چار اکائیوں کو اکھٹا نہیں کریں گے اس وقت تک بلوچستان سمیت پاکستان ترقی نہیں کرے گا ہمیں مل کر کام کرنا ہوگا ، اس موقع پر قبائلی رہنماء عتیق الرحمن کاکڑ نے بلوچستان عوامی پارٹی میں شمولیت کا اعلان کرتے ہوئے کہاکہ اپنے خاندان سمیت بلوچستان عوامی پارٹی میں شمولیت کا اعلان کرتا ہوں اورامیدکرتاہوںکہ بلوچستان عوامی پارٹی عوام کے مسائل حل اور قوموںکے درمیان نفرتوںکے خاتمے کیلئے اقدامات کرینگے،انہوں نے کہاکہ بلوچستان کے عوام کے مسائل حل کرنے کی امید بلوچستان عوامی پارٹی ہے امید ہے کہ وہ انتخابات میں جو بھی وعدے کررہی ہیں اسے پورا کریں گے اس سے عوام میدا ن میں آئے گی کیونکہ نوجوان جس پارٹی کیساتھ ہوںگے وہ کامیاب ہوگی اور ہم عوام سے جو بھی وعدے کررہے ہیں اسے ہر حالت میں پورا کریں گے ۔