کوہاٹ انڈس ہائی وے پر ٹریفک کے خوفناک حادثے میںدو بچوں سمیت چھ مسافر جھلس کر جاں بحق ، گیارہ زخمی

منگل جون 18:30

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 05 جون2018ء) کوہاٹ انڈس ہائی وے پر ٹریفک کے خوفناک حادثے میںدو بچوں سمیت چھ مسافر جھلس کر جاں بحق اور گیارہ زخمی ہوگئے۔۔ٹریفک حادثہ علی الصبح پشاور سے ڈیرہ اسماعیل خان جانیوالے مسافر فلائنگ کوچ اور مخالف سمت سے آنیوالی ٹرک کے مابین پیش آیا۔تصادم کے بعد فلائنگ کوچ میں آتشزدگی سے جان بحق افراد کی لاشیںبری طرح جل کر مسخ ہوگئی ہیں ۔

فلائنگ کوچ کی باڈی کاٹ کر لاشوں اور زخمیوں کو نکالا گیاجبکہ میتیں جھلسنے اور مسخ ہوجانے سے دو افراد کی تاحال شناخت نہ ہوسکی۔۔پولیس نے حادثے کا مقدمہ ٹرک ڈرائیور کے خلاف درج کرتے ہوئے انہیں گرفتار کرلیاہے۔تفصیلات کے مطابق پشاور سے ڈیرہ اسماعیل خان جانیوالی مسافر فلائنگ کوچ نمبر 1745کوہاٹ انڈس ہائی وے پر خواصی بانڈہ کے قریب مخالف سمت سے آنیوالی ٹرک نمبر پشاورZ-8519 سے ٹکرا گئی۔

(جاری ہے)

تصادم کے دوران فلائنگ کوچ گاڑی میں شارٹ سرکٹ کے باعث اچانک خوفناک آگ بھڑک اٹھی جسنے دیکھتے ہی دیکھتے پوری گاڑی کو لپیٹ میں لے لیاجسکے نتیجے میں فلائنگ کوچ میں سوار چھ مسافر سات سالہ بچہ سخی نواللہ ولد قاسم اللہ ،دس سالہ جمال فراز ولد عید فراز ساکنان ایف آربنوں، فلائنگ کوچ ڈرائیور زاہد اللہ ولد سبز علی،مزمل ولد محب اللہ ساکنان لکی مروت اور دیگر دو مسافر جنکی تاحال شناخت نہ ہوسکی جھلس کر موقع پر جاں بحق ہوگئے جبکہ حادثے کے دوران فلائنگ کوچ میں سوار گیارہ مسافر حسیب،مدثر،صلاح الدین،مدثر ملک ساکنان لکی مروت،محمد زمان سکنہ مظفر گڑھ،،عید وزیر،عبدالقیوم ساکنان ایف آر بنوں،،عاطف سکنہ لیہ پنجاب،،عرفان حسین سکنہ بھکر،محمد کامل سکنہ وزیرستان اور نائب خان سکنہ ڈیرہ اسماعیل خان بھی جھلس کر زخمی ہوئے۔

واقعہ کی اطلاع ملتے ہی ضلعی پولیس سربراہ عباس مجید خان مروت اور دیگر پولیس حکام ریسکیو 1122کے ہمراہ فوری طور پر موقع پر پہنچ گئے اور حادثے میں جاں بحق اور زخمی افراد کو فلائنگ کوچ کی گاڑی کاٹ کر نکال نے کے بعد کوہاٹ ڈویژنل ہیڈ کوارٹر کے ڈی اے ہسپتال پہنچایاگیا۔جہاں بعض زخمیوں کو تشویشناک حالت کے باعث برن سنٹر ٹیکسلا منتقل کردیا گیا جبکہ لاشوں کو پوسٹ مارٹم کے بعد اپنے آبائی علاقون کو روانہ کردیا گیا ہے ۔ادھر پولیس نے حادثے کا مقدمہ تھانہ جرما میںٹرک ڈرائیور شاہ محمد سکنہ بڈھ بیر کے خلاف درج کرتے ہوئے انہیں گرفتار کرلیا ہے اور حادثہ رونما ہونے کی وجوہات کے حوالے سے مزیدتفتیش شروع کردی گئی ہے۔