معروف صحافی کامران خان بھی ریحام خان کی کتاب پر پھٹ پڑے

ریحام خان نے چند پیسوں کے لیے اپنی ازدوای زندگی کو بیچا اور بہت سے ایسے لوگوں کے اعتماد کو ٹھیس پہنچائی جن سے وہ پیشہ وارازنہ سلسلے میں ملیں ، کامران خان

Syed Fakhir Abbas سید فاخر عباس منگل جون 20:31

معروف صحافی کامران خان بھی ریحام خان کی کتاب پر پھٹ پڑے
اسلام آباد (اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار-05 جون 2018ء) :معروف صحافی کامران خان بھی ریحام خان کی کتاب پر پھٹ پڑے،،ریحام خان کی ٹھیک ٹھاک کلاس لے لی۔عروف اینکر و صحافی کامران خان نے اپنے ٹوئیٹ میں کہا کہ ریحام خان نے چند پیسوں کے لیے اپنی ازدوای زندگی کو بیچا اور بہت سے ایسے لوگوں کے اعتماد کو ٹھیس پہنچائی جن سے وہ پیشہ وارازنہ سلسلے میں ملیں۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کی سابق اہلیہ ریحام خان کی کتاب اب تک کافی متنازعہ ہو چکی ہے ۔۔عمران خان کی سابق اہلیہ ریحام خان نے الیکشن سے پہلے اپنی کتاب منظر عام پر لانے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس حوالے سے کتاب کے کچھ مندرجات سامنے آ چے ہیں ،،ریحام خان کی اس کتاب نے شائع ہونے سے قبل ہی ایک نیا پنڈوراباکس کھول دیا ہے۔

(جاری ہے)

ریحام خان نے اپنی کتاب میں عمران خان کے قریبی ساتھیوں زلفی بخاری ، وسیم اکرم اور انیلہ خواجہ پر جنسی نوعیت کے الزامات عائد کیے ہیں۔ اپنی کتاب میں ریحام خان نے اپنے سابق شوہر اعجاز رحمان پر بھی الزامات عائد کیے۔ ان چاروں افراد کی جانب سے ریحام خان کو قانونی نوٹس بھجوا دیا گیاہے۔ نوٹس میں ریحام خان سے 14 جون تک جواب طلب کیا گیا ہے۔

اس نوٹس کے حوالے ریحام خان کا کہنا تھا کہ مجھے جونوٹس بھجوایا گیا ہے کہ اس کی جگہ ردی کی ٹوکری ہے۔اس حوالے ریحام خان کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی جوحرکتیں کررہی ہےاس کا میری کتاب سے کوئی تعلق نہیں۔میری کتاب ان کوبےنقاب نہیں کررہی یہ خود کوبے نقاب کررہےہیں۔ تاہم اس حوالے سے ریحام خان کی کتاب پر مختلف صحافیوں کی جانب سے بھی سخت ردعمل آرہا ہے اور ایک ایسا ہی ردعمل معروف صحافی و اینکر پرسن کامران خان کا آیا۔

کامران خان کا کہنا تھا کہ ریحام خان کسی داد کی مستحق نہیں ہیں انہوں نے اپنی ازدواجی زندگی کو شہرت اور چند پیسوں کے لیے رسوا کیا۔
کامران خان نے اپنے ٹوئیٹ میں کہا کہ مبینہ کتاب میں انہوں نے بہت سے ایسے لوگوں کے اعتماد کو ٹھیس پہنچائی جن سے وہ پیشہ وارانہ ذمہ داریوں کے سلسلے میں ملیں۔وہ عمران خان سے بغض رکھتی ہیں جو کہ صریحا بدنیتی پر مبنی ہے۔انکے اس عمل کے پیچے سیاسی مقاصد نظر آتے ہیں۔