لاہور ہائیکورٹ نے قصور میں عدلیہ مخالف ریلی کے ملزموں کو بیان ریکارڈ کروانے کی مہلت دیدی

منگل جون 22:00

لاہور۔5 جون(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 05 جون2018ء) لاہور ہائیکورٹ نے قصور میں عدلیہ مخالف ریلی اور احتجاج اور ریلی نکالنے کے الزام سابق ارکان اسمبلی سمیت دیگر ملزموں کو بیان ریکارڈ کروانے کے لیے مہلت دے دی۔ فل بنچ نے دوملزماوں کی معافی کے بارے میں سپریم کورٹ کے احکامات کی نقول پیش کرنے کا حکم دے دیا۔

(جاری ہے)

منگل کو لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس سید مظاہر علی اکبر نقوی کی سربراہی میں تین رکنی فل بنچ نے عدلیہ مخالف احتجاج پر سماعت کی ملزموں کے وکیل نے استدعا کی کہ صفائی کا بیان ریکارڈ کروانے کے لیے انہیں وقت دیا جائے درخواست گزار قصور بار کے صدر نسیم مرزا کے وکیل احسن بھون نے اس بات کی تردید کی کہ سپریم کورٹ نے دوملزموں جمیل خان اور ناصر خان کی حد تک معافی دے دی ہے۔

فل بنچ کے سربراہ جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی نے ہدایت کی اگر کوئی ایسے احکامات ہے تو اس کے احکامات کی نقل پیش کی جائے فل بنچ نے ملزموں کے وکیل استدعا منظور کر لی درخواست پر مزید کارروائی 8 جون ہو گی ۔