سات ماہ میں تہترارب کے موبائل فون،اکہتر ارب کی گاڑیاں درآمد

10 ماہ میں 564 ارب مالیت کا کھانے پینے کا سامان درآمد کیا گیا۔ پاکستانی عوام 53 ارب کی چائے اور24 ارب کا درآمدی دودھ پی گئے

بدھ جون 16:14

سات ماہ میں تہترارب کے موبائل فون،اکہتر ارب کی گاڑیاں درآمد
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 06 جون2018ء) موبائل فون سے چائے کی چسکیوں تک، گاڑیوں سیموٹرسائیکلز اور چائے سے لیکر کھانے پینے کی دیگر اشیا تک پاکستانیوں کوغیرملکی مصنوعات کی لت لگ گئی۔ سات ماہ میں تہتر ارب کے موبائل فون ، اکہتر ارب کی گاڑیاں منگوالیں۔کھانے پینے سے لے کر روزمرہ استعمال کی اشیاتک،درآمدی مصنوعات کے استعمال میں تیزی سے اضافہ ہونیلگا۔

10 ماہ میں 564 ارب مالیت کا کھانے پینے کا سامان درآمد کیا گیا۔ پاکستانی عوام 53 ارب کی چائے اور24 ارب کا درآمدی دودھ پی گئے۔یہی نہیں اس دوران 47 ارب کی دالیں اور 10 ارب روپے کا ڈرائی فروٹ بھی ہڑپ کر گئے۔187 ارب کا پام آئل اور 12 ارب 84 کروڑ کا سویا بین بھی درآمد کیا گیا۔اسمارٹ فون کے شوقین پاکستانیوں نے 73 ارب کے موبائل فون اور71 ارب روپے مالیت کی موٹرکاریں بھی بیرون ملک سے ہی منگوائیں۔

(جاری ہے)

86 ارب روپے کے جہاز اور کشتیاں بھی درآمد کی گئیں۔۔گرمی کی شدت بڑھنے کے ساتھ ساتھ الیکٹرانک مصنوعات کی مانگ بھی بڑھ گئی۔گزشتہ نو ماہ میں ایئر کنڈیشنرز کی پیداوار 2 لاکھ 36 ہزار سے بڑھ کر 2لاکھ 54ہزارہوگئی جبکہ الیکٹرک فین کی پیداوار بھی 16 لاکھ سے بڑھ کر 17 لاکھ 72ہزار تک پہنچ گئی۔۔برآمدات کے مقابلے میں درآمدات بڑھنے سے دس ماہ میں تجارتی خسارہ 30 ارب ڈالر سے تجاوز کر گیا۔۔