مائیکرو فنانس انڈسٹری کو ڈیجیٹلائز کرنے کے لیے پاکستان مائیکرو فنانس نیٹورک اور ٹی پی ایس کے مابین معاہدہ

بدھ جون 16:56

مائیکرو فنانس انڈسٹری کو ڈیجیٹلائز کرنے کے لیے پاکستان مائیکرو فنانس ..
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 06 جون2018ء) پاکستان کی مائیکرو فنانس انڈسٹری کو ڈیجیٹل پلیٹ فارم سروسز کے ذریعے ڈیجیٹلائز کرنے کے لیے پاکستان مائیکرو فنانس نیٹ ورک اور ٹی پی ایس کے مابین معاہدہ طے پا گیا ہے۔ تقریب میں پاکستان مائیکرو فنانس نیٹ ورک کے بورڈ ممبرز اور دیگر نے شرکت کی۔ معاہدے کا مقصد ایسے افراد کو فنانشل سروسز کے دائرہ کار میں لانا ہے جو اب تک بینکنگ سروسز سے یا تو دور ہیں یا محدود سطح کا فائدہ اٹھا پا رہے ہیں۔

اس اقدام کے لیے یو کے ایڈ کے ڈیاپارٹمنٹ فار انٹرنیشنل ڈیویلپمنٹ کے تعاون کا شکریہ ادا کیا گیا۔ ڈیجیٹل پلیٹ فارم سروسز کی بدولت مائیکرو فنانس پرو وائیڈرز ڈیجیٹل فنانشل سروسز میں نئے سنگ میل عبور کرنے میں کامیاب ہو سکیں گے۔

(جاری ہے)

اس معاہدے کی بدولت مائیکرو فنانس سیکٹر دس ملین قرض دہندگان، پچاس ملین ڈیپازٹ اکائونٹس اور گیارہ ملین انشورنس کلائینٹس حاصل کرنے کا حدف 2020 تک حاصل کر سکے گا۔

پاکستان مائیکرو فنانس نیٹ ورک، ٹی پی ایس کی صلاھیتوں سے فائدہ اٹھاتے ہوئے ڈیجیتل پیمنٹ سروسز کو مزید بہتر بنانے میں کام کرے گا۔ ڈیجیٹل پلیٹ فارم سروسز بنانے سے نیشنل فنانسل انکلوژن سٹریٹجی اور فنانشل انکلوژن پروگرام میں طے کیے گئے اہداف کو حاصل کرنے میں خاطر کواہ مدد ملے گی۔ ٹی پی ایس کی جانب سے ڈیجیٹل پلیٹ فارم لگائے جانے سے مائیکرو فنانس سے جڑے ادارے پورے ملک میں اپنے کام کو مزید بہتر مناتے ہوئے وسعت دے سکیں گے۔

اس سسٹم سے لون مینجمنٹ، ری پیمنٹ ، رئیل ٹائم فنڈز ٹرانسفر اور بلنگ سسٹم کے حوالے سے مائیکرو فنانس انڈسٹری میں بہتری آئے گی۔ مستقبل میں اس پلیٹ فارم کی بدولت ایم والٹس کی تعداد میں اضافہ کے ھوالے سے بھی مدد ملے گی۔ اس موقع پر پاکستان مائیکرو فنانس نیت ورک کے چیف ایگزیکٹو، سید محسن احمد کا کہنا تھا کہ اس معاہدے سے ایک ایسے سفر کا آغاز ہو گیا ہے جس کی بدولت مائیکرو فنانس آپریشنز کو ڈیجیٹلائز کیا جا سکے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ ہمارا عزم ہے کہ ہم گلی میں نچلی سطح پر بھی کاروبار کرنے والے فراد کو بھی اس نیٹ ورک کا حصہ بنانے میں کامیاب ہوں۔ ٹی پی ایس کے چیف ایگزیکٹو، شہزاد شاہد کا کہنا تھا کہ ٹیکنالوجی ہی وہ واحد راستہ ہے جس کی بدولت ہم کم آمدن والے افراد کو بر وقت اور آسانی سے فنانشل نیت ورک میں لا سکتے ہیں۔ انہوں نے پی ایم این کے ساتھ اشتراک پر کوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ٹی پی ایس پہلے بھی ڈیجیتل پلیٹ فارم کے ذریعے مختلف بینکوں کو آپس میں کنیکٹ کر چکا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس معاہدے ٹی پی ایس کو موقع ملا ہے کہ عوام کی بڑی تعداد کو فنانشل نیت ورک میں لا سکے جو کہ اب تک ڈیجٹل فنانشل سروسز سے دور ہیں۔ شہزاد شاہد کا مزید کہنا تھا کہ اس معاہدے کی بدولت پاکستان کی معیشت میں بہتری کے ساتھ ساتھ عام آدمی کی زندگی میں بھی مثبت تبدیلی آئے گی۔