پاکستان کی نظریاتی ، جغرافیائی سرحدوں اور قومی آزادی و خود مختاری کی حفاظت کے لیے محبان دین ووٹرز کو متحد ہوناہوگا ‘لیاقت بلوچ

بے مقصد حمایت اور مخالفت کی سیاست ناکام ہو گئی ہے ، 2018 ء کے انتخابات ظالم اور مظلوم ، اسلامی نظریہ اور سیکولر نظریہ کے درمیان مقابلہ ہے‘سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی

بدھ جون 16:56

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 06 جون2018ء) جماعت اسلامی پاکستان اور متحدہ مجلس عمل کے سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ نے کہاکہ متحدہ مجلس عمل نے اسلامی ، عوامی ، فلاحی اور انقلابی منشور قوم کے سامنے پیش کردیاہے ، نظام مصطفیؐ کا قیام ، قومی آزادی اور وحدت کا تحفظ ، اسلام کا نظام عدل ، معاشی خوشحالی ، زراعت کی ترقی ، خواتین ، طلبہ ، نوجوانوں اور اقلیتوں کے حقوق کا تحفظ اور ملک میں فرقہ وارانہ تعصبات کا خاتمہ متحدہ مجلس عمل کی منزل ہے ، عوام اعتماد دیں اورووٹر اسلامی نظریہ کو ترجیح دیں تو تمام طبقات کو عزت و وقار ملے گا ۔

کلفٹن کالونی این اے 130 میں عوامی افطاری کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے لیاقت بلوچ نے کہاکہ پاکستان کی نظریاتی ، جغرافیائی سرحدوں اور قومی آزادی و خود مختاری کی حفاظت کے لیے محبان دین ووٹرز کو متحد ہوناہوگا ۔

(جاری ہے)

بے مقصد حمایت اور مخالفت کی سیاست ناکام ہو گئی ہے ۔ 2018 ء کے انتخابات ظالم اور مظلوم ، اسلامی نظریہ اور سیکولر نظریہ کے درمیان مقابلہ ہے ۔

انٹر نیشنل اسٹیبلشمنٹ کو عوامی طاقت سے شکست دیں گے ۔ پاکستان کو خود انحصاری ، ترقی و خوشحالی کی تمام بنیادیں حاصل ہیں ۔ سنجیدہ ، اہل ، دیانتدار ، قومی مفادات کی وفادار قیادت ہی بحرانوں سے نجات دلائے گی ۔ قرضوں کی معیشت کے خاتمہ ، خود کفالت اور کرپشن فری پاکستان کے ہدف کے لیے ٹھوس اقدامات کریں گے ۔ لیاقت بلوچ نے اسلام آباد میں سیاسی رہنماسابق سینیٹر آصف وردگ سے ملاقات کی ، ملکی حالات پر تبادلہ خیال اور ایم ایم اے کی انتخابی مہم کے امور پر بات ہوئی ۔