ایس ای سی پی میں نئی کمپنیوں کی رجسٹریشن میں17 فیصد اضافہ،رجسٹرڈ کمپنیوں کی کل تعداد 86ہزار 876ہو گئی

بدھ جون 17:34

ایس ای سی پی میں نئی کمپنیوں کی رجسٹریشن میں17 فیصد اضافہ،رجسٹرڈ کمپنیوں ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 06 جون2018ء) سکیورٹیز اینڈ ایکس چینج کمیشن آف پاکستان میں مئی میں ایک ہزار چورانوے نئی کمپنیاں جسٹرکی گئیں۔ یہ تعداد گزشتہ سال کی اسی مدت کے مقابلے میں سترہ فیصد زائد ہے۔ ایس ای سی پی میں رجسٹرڈ کمپنیوں کی کل تعداد 86ہزار 876ہو گئی ہے۔ کمپنیوں کی رجسٹریشن کو آسان بنانے کے لئے کی گئی اصلاحات اور رجسٹریشن کی فیسوں میں نمایاں کمی سے رجسٹریشن کے رجحان میں اضافہ ہوا ہے۔

رجسٹریشن حاصل کرنے والی 76فیصد کمپنیاں پرائیویٹ لمیٹڈ ہیں جبکہ بائیس فیصد سنگل ممبر اور دو فیصد کمپنیوں نے بطور پبلک لسٹڈ، غیر منافع بخش اور ٹریڈ آرگنائزیشزز اورغیر ملکی کمپنیوں کے طور پر رجسٹریشن حا صل کی۔ اس ماہ سب سے زیادہ رجسٹریشن ٹریڈنگ کے شعبے میں ہوئی جہاں رجسٹریشن حاصل کرنے والی کمپنیوں کی تعداد 178 رہی۔

(جاری ہے)

خدمات کے شعبے میں 153 کمپنیاں رجسٹر ہوئیں، انفرمیشن ٹیکنالوجی کے شعبے میں 135، تعمیرات میں 132 کمپنیاں، سیاحت میں42 ، فوڈ اینڈ مشروبات میں 39، رئیل اسٹیٹ میں36، تعلیم میں 33، انجینئرنگ میں 32، کارپوریٹ ایگریکلچرل میں26، ٹرانسپورٹ میں 21 ،دواسازی، ٹیکسٹایل، ایڈورٹائزنگ اور مارکیٹنگ، ہر ایک شعبے میں 19، آٹو اینڈ الائیڈ کے شعبے میں 18 کمپنیاں رجسٹر ہوئیں، براڈکاسٹنگ اینڈ ٹیلی کاسٹنگ میں 16کمپنیاں، کیمیکل، ایندھن، توانائی اور صحت، ہر ایک میں 12کمپنیاں رجسٹر ہوئیں، کمیونیکیشن اور پاور جنریشن،ہر ایک میں 11جبکہ 118کمپنیوں نے دیگر شعبوں میں رجسٹریشن حاصل کی۔

اس دوران پانچ غیر ملکی کمپنیاں میں اسلام آباد اور کراچی میں رجسٹر ہوئیں جبکہ چھپن مقامی کمپنیوں میں غیر ملکی سرمایہ کاری ہوئی۔ یہ سرمایہ کاری کینیڈا،، چین،، چیک ریپبلک، ڈنمارک، ایران،، اردن، جنوبی کوریا، لبنان، نیپال، نیدر لینڈ، اومان، سعودیہ عرب، سنگا پور، تنزانیہ، ترکی،، یوکرائن اور امریکہ کے سرمایہ کاروں کی جانب سے ہوئی۔ مئی میں سب سے زیادہ کمپنیاں اسلام آباد میں رجسٹر ہوئی جن کی تعداد 402 ہے جبکہ لاہور میں 271 اور کراچی میں 226کمپنیاں رجسٹر ہوئیں۔ پشاور،، ملتان،، گلگت بلتستان، فیصل آباد، کوئٹہ اور سکھر میں بالترتیب 9,14,31,39,42,60 کمپنیاں رجسٹر ہوئیں۔