لاہور ہائیکورٹ نے نگران وزیراعظم ناصر الملک کے دورہ سوات پر کروڑوں اخراجات کی واپسی کیلئے دائردرخواست

پررجسٹرار آفس کاعائد اعتراض ختم کر دیا درخواست ابتدائی سماعت کیلئے منظور

بدھ جون 20:21

لاہور ہائیکورٹ نے نگران وزیراعظم ناصر الملک کے دورہ سوات پر کروڑوں ..
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 06 جون2018ء) لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس مامون رشید شیخ نے نگران وزیراعظم ناصر الملک کے سوات دورے پر کروڑوں روپے کے اخراجات کی واپسی کیلئے دائردرخواست پررجسٹرار آفس کاعائد اعتراض ختم کر دیا،،عدالت نے درخواست ابتدائی سماعت کیلئے منظور کر لی۔درخواست گزار بیرسٹر جاوید اقبال جعفری نے موقف اختیار کیا ہے کہ نگران وزیراعظم نے ریاستی ذمہ داری کی بجائے ذاتی امور کے لئے پروٹوکول استعمال کیا، نگران وزیراعظم نے اپنے اختیارات سے تجاوز کیا۔

(جاری ہے)

درخواست گزار،نگران وزیراعظم نے اپنی آبائی رہائش گاہ سوات میں 22گاڑیوں کے کانوائے اور پروٹول کا استعمال کر کے قومی خزانے کو نقصان پہنچایا، انہوں نے استدعا کی کہ عدالت پروٹوکول کے معاملے کا نوٹس لے اور اضافی اخراجات واپس لینے کا حکم دے،انہوں نے بتایا کہ رجسٹرار آفس نے درخواست پر کمپیوٹرائزڈ پرنٹ شدہ درخواست نہ ہونے کا بلاجواز اعتراض عائد کیا،جس پر عدالت نے درخواست پررجسٹرار آفس کاعائد اعتراض ختم کر دیا،،عدالت نے درخواست ابتدائی سماعت کے لئے منظور کر لی۔