پاکستان ایس سی او کے رکن ممالک کے درمیان تمام تنازعات کا مذاکرات کے ذریعے حل پر یقین رکھتا ہے، پاکستان دہشت گردی کیخلاف جنگ میں فرنٹ لائن پر ہے،دہشت گردی کیخلاف جنگ میں ہم نے بے پناہ جانی اور مالی قربانیاں دی ہیں

چین میں پاکستانی سفیر مسعود خالد کا بیجنگ ریویو کو انٹرویو

بدھ جون 21:01

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 06 جون2018ء) چین میں پاکستان کے سفیر مسعود خالد نے کہا ہے کہ پاکستان شنگھائی تعاون تنظیم (ایس سی او) کے رکن ممالک کے درمیان تمام تنازعات کا مذاکرات کے ذریعے حل پر یقین رکھتا ہے اور بھارت کیساتھ بھی انہیں اصولوں پر عملدرآمد کر رہا ہے۔گزشتہ روز بیجنگ ریویو کو انٹرویو دیتے ہوئے سفیر مسعود خالد نے کہا کہ پاکستان اور بھارت نے گزشتہ سال بیک وقت ایس سی او میں شمولیت اختیار کی،ہم اعتماد سازی اور تعاون کیلئے شنگھائی کے روح کی پیروی کرتے ہیں اور یہ پاکستانی خارجہ پالیسی کے رہنماء اصول ہیں جو ہمیں ایس سی او میں بھی رہنمائی فراہم کررہے ہیں۔

تنظیم میں پاکستان کے کردار سے متعلق ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے سفیر نے کہا کہ پاکستان 2005 تک ایس سی او کا مبصر رہا جبکہ گزشتہ سال آستانہ سمٹ میں پاکستان کو مکمل رکنیت مل گئی۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ ایس سی او میں سیکورٹی، سیاست، معیشت اور ثقافتی معاملات پر توجہ دی جاتی ہے اور تنظیم کا مکمل رکن بننے کے بعد سے ہی پاکستان ان تمام شعبوں میں تعمیری کردار ادا کر رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان دہشت گردی کیخلاف جنگ میں فرنٹ لائن پر ہے،دہشت گردی کیخلاف جنگ میں ہم نے بے پناہ جانی اور مالی قربانیاں دی ہیں۔ رکن ممالک انسداد دہشت گردی آپریشنز میں پاکستان کے تجربات سے استفادہ کر سکتے ہیں جس سے خطے کی سیکورٹی صورتحال میں بہتری لائی جا سکتی ہے۔مسعود خالد نے کہا کہ ایس سی او نے اپنے قیام سے لیکر اب تک علاقائی امن و استحکام کے فروغ میں نمایان سنگ میل حاصل کیا ہے۔