سابق سیکرٹری اطلاعات ملک اعظم کو پہلا چیف انفارمیشن کمشنر مقرر کرنے کا فیصلہ

تقرری کا نوٹیفکیشن جلد جاری ہونے کا امکان

بدھ جون 21:08

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 06 جون2018ء) وزارت اطلاعات و نشریات کے سابق سیکرٹری ملک محمد اعظم کو پہلا چیف انفارمیشن کمشنر مقرر کرنے کی منظوری دے دی گئی،جو رائٹ ٹو انفارمیشن کمیشن کی سربراہی کے فرائض سرانجام دیں گے، سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے حکومت کے خاتمے سے چند روز قبل وزارت اطلاعات کی جانب سے کمیشن کے چیئرمین اور ممبران کی تقرری کیلئے بھجوائی گئی سمری کی منظوری دے دی تھی اور آئندہ چند روز میں چیئرمین اور ممبران کی تقرری کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا جائے گا۔

(جاری ہے)

ذرائع کے مطابق رائٹ ٹو انفارمیشن کا سربراہ سابق سیکرٹری اطلاعات ملک محمد اعظم کو مقرر کیا گیا ہے جبکہ کمیشن کے دو ممبران میں طاہر اسحاق مغل اور مختار احمد علی کے نام شامل ہیں، نوٹیفکیشن کے اجراء کے بعد کمیشن اپنا باقاعدہ کام شروع کر دیا جائے گا، جس کا مرکزی دفتر اسلام آباد میں قائم کیا جائے گا، رائٹ ٹو انفارمیشن کمیشن میں کوئی بھی شہری وفاقی حکومت اور اس کے ماتحت اداروں، وزارتوں اور ڈویژنوں تک اطلاعات کی رسائی نہ ملنے پر اس کمیشن میں اپیل دائر کر کے تمام معلومات حاصل کرسکے گا، کمیشن کو اس بات کا اختیار حاصل ہو گا کہ اگر کوئی حکومتی ادارہ یا اہلکار انفارمیشن دینے سے انکار کرے تو اس کے خلاف سخت قانونی کاروائی عمل میں لائی جا سکے گی، کمیشن کے قیام کا مقصد عوام کو اطلاعات تک رسائی دینا ہے۔