کاشتکاروں کی فلاح کیلئے اقدامات کر رہا ہے ۔محکمہ زراعت

بدھ جون 21:29

لاہور۔6 جون(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 06 جون2018ء) ترجمان محکمہ زراعت پنجاب نے کہا ہے کہ محکمہ کاشتکاروں کی فلاح کیلئے اقدامات کر رہا ہے تاکہ ہمارا ملک غذائی پیداوار میں مستقل بنیادوں پر خود کفیل ہو،،پنجاب میں موجود تمام کاشتکاروں تک جدید پیداواری ٹیکنالوجی کی منتقلی ہمیشہ سے ایک مسئلہ رہی ہے لیکن سمارٹ فون کے ذریعے محکمہ زراعت پنجاب میں موجود تمام کاشتکاروں کو جدید پیداواری ٹیکنالوجی کی فراہمی یقینی بنایا جا رہا ہے ۔

محکمہ زراعت پنجاب نے PPRA کے قواعد پر عمل درآمد کرتے ہوئے ٹیلی نار پاکستان کو" کنیکٹڈ ایگریکلچر پلیٹ فارم پنجاب پروگرام کیلئے کنٹریکٹ ایوارڈ کیا ۔اس کنٹریکٹ کے تحت ٹیلی نار پاکستان نہ صرف موبائل فون بلکہ زراعت کے متعلقہ ایپلکشنز اور 1GB فری 3G/4G انٹرنیٹ مہیا کررہا ہے اور ان کو استعمال کرنے کیلئے 30 منٹ فی کسان تربیت بھی فراہم کررہا ہے۔

(جاری ہے)

اس مقصد کیلئے ٹیلی نار پاکستان نے پنجاب کے تمام اضلاع میں سہولت سینٹرز قائم کئے ہیں اور ان تمام کاموں کیلئے حکومت پنجاب کسانوں کی جگہ ٹیلی نار کمپنی کو اس کے عوض99 روپے بمعہ ٹیکس ادا کر رہا ہے جبکہ مارکیٹ میں صرف1GB انٹرنیٹ کے استعمال کی قیمت100 روپے سے زائد ہے۔اس پروگرام کے تحت پہلے مرحلے میں کسان پیکج کے تحت1 لاکھ10 ہزار رجسٹرڈ کاشتکاروں کو سمارٹ فون اور 3G/4G سم کارڈفراہم کیے جا رہے ہیں ۔

اب تک محکمہ زراعت 48 ہزار کاشتکاروں کو سمارٹ فون فراہم کر چکا ہے۔ بعض اخبارات نے بے بنیاد اور حقائق سے منافی خبریں شائع کیں کہ ان تمام سمارٹ فونز کی خریداری پر 4 ارب روپے کی لاگت خرید آئی جبکہ درحقیقت 99 کروڑ90 لاکھ روپے کی مالیت آئی ہے اور مارکیٹ میں ایسی کوالٹی کا سیٹ 13 ہزار روپے سے زائد مالیت کا دستیاب ہے جبکہ حکومت پنجاب نے فی سیٹ9 ہزار روپے میں خرید کیا ہے ۔

بے زمین اورمزراعین کیلئے یہ سمارٹ فون 500/- روپے جبکہ اراضی مالکان کیلئے صرف1000/- روپے میں دستیاب ہے ۔اس سمارٹ فون کی خریداری اور دیگر سروسز کیلئے محکمہ زراعت پنجاب اورپنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ (PITB)کے افسران پر مشتمل ٹیکنیکل کمیٹی تشکیل دی گئی جنہوں نے مکمل کوالٹی کو پرکھتے ہوئے اس کی خرید کاکام مکمل کیا۔یہ سمارٹ فونز ای کریڈٹ سکیم کے تحت بلا سود قرضہ لینے اور قرضہ لے کرواپس کرنے والے کسانوں کو دئیے جارہے ہیں اور ان کے ذریعے زرعی توسیعی خدمات فراہم کی جارہی ہیں۔

ترجمان نے بتایا کہ موبائل فونز کی تقسیم کا یہ عمل شفاف طریقے سے ابھی جاری ہے اور اس میں تمام کام محکمانہ قواعد و ضوابط کو مد نظر رکھتے ہوئے سرانجام دئیے جا رہے ہیں۔اس سکیم کے دوسرے مرحلے میں کسان پیکج کے تحت تمام رجسٹرڈ کاشتکاروں کو سمارٹ فونز مہیا کیے جائیں گے۔