پاکستان اور بھارت کے رکن بننے کے بعد ایس سی او توجہ کا مرکز بنا ،چین

ایران کے لیڈر آیت اللہ خامنہ ای بطور مبصر شرکت کریں گے ، جوہری معاہدے پر چین کی پوزیشن واضح ہے ،فریقین معاہدے کی شرائط پر عملد درآمد یقینی بنائیں، ترجمان چینی وزارت خارجہ

بدھ جون 22:34

پاکستان اور بھارت کے رکن بننے کے بعد ایس سی او توجہ کا مرکز بنا ،چین
بیجنگ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 06 جون2018ء) چین نے کہا ہے کہ پاکستان اور بھارت کے رکن بننے کے بعد ایس سی او توجہ کا مرکز بنا ہے ، ایران کے لیڈر آیت اللہ خامنہ ای اجلاس میں بطور مبصر شرکت کریں گے ، ایران جوہری معاہدے پر چین اپنی پوزیشن واضح کر چکا ہے ، تمام فریقین کو چاہیے معاہدوں کی شرائط پر عملد درآمد یقینی بنائیں ، یہ ایٹمی عدم پھیلائو کی عالمی کوششوں کو برقرار رکھنے میں معاون ثابت ہوگا ۔

ترجمان چینی وزارت خارجہ نے معمول کی پریس بریفنگ میں کہا کہ پاکستان اور بھارت کے رکن بننے کے بعد( ایس سی او) توجہ کا مرکز بنا ہے ، زیادہ سے زیادہ ممالک ایس سی او سے تعاون بڑھانا چاہتے ہیں ، شنگھائی تعاون تنظیم کا اجلاس9اور10جون کو چین کے شہری چینگ ڈو میں ہوگا ۔ا یران کے سپریم لیڈر آیت اللہ خامنہ ای اجلاس میں بطور مبصر شرکت کریں گے جبکہ افغانستان اور منگولیا کے سربراہان بھی بطور مبصر شکرت کریں گے ۔

(جاری ہے)

ترجمان نے کہا کہ ایران جوہری معاہدے پر چین اپنی پوزیشن واضح کر چکا ہے ، تمام فریقین کو جامع معاہدوں پر عمل درآمد جاری رکھنا چاہیے ، تمام فریقین کو چاہیے معاہدوں کی شرائط پر عل درآمد یقینی بنائیں ۔ یہ ایٹمی پھیلائو کی عالمی کوششوں کو برقرار رکھنے میں معاون ثابت ہوگا۔ مشرق وسطیٰ میں امن واستحکام اور عالمی مفادات کے لئے یہ ضروری ہے ۔