پاکستانی فیلڈنگ کوچ کے مستعفی ہونے کے پیچھے ”بھارتی ہاتھ “ نکل آیا

سٹیو رکسن تنخواہ کی ادائیگی پرمعمولی تاخیر پر برہم تھے ،نجی رہا ئشگاہ چاہتے تھے

جمعرات جون 11:32

پاکستانی فیلڈنگ کوچ کے مستعفی ہونے کے پیچھے ”بھارتی ہاتھ “ نکل آیا
لیڈز(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 7 جون 2018 ء) سکاٹ لینڈ کے خلاف دو ٹی 20 انٹر نیشنل میچوں کے بعد پاکستانی ٹیم کے غیر ملکی کوچز اپنے گھروں کو روانہ ہوجائیں گے۔ آسٹریلیا کے سٹیو رکسن دو سال مکمل ہونے کے بعد پاکستانی ٹیم کو خیرباد کہہ رہے ہیں ان کی جگہ ایک اور آسٹریلوی ڈیرن بیری نئے فیلڈنگ کوچ کے لئے مضبوط امیدوار ہیں۔ سٹیو رکسن پاکستان کرکٹ بورڈ کے افسران سے ناراض ہوکر کوچنگ سے علیحدہ ہورہے ہیں۔

انہیں انڈین پریمیئر لیگ کی فرنچائز کی جانب سے پیشکش بھاگئی ہے۔ وہ گذشتہ ہفتے لیڈز ٹیسٹ سے قبل دلبرداشتہ تھے۔ میچ سے ایک دن قبل پاکستانی ڈریسنگ روم میں بظاہر ماحول پر سکون دکھائی تھا لیکن ہیڈ کوچ اور کرکٹ بورڈ کے اعلیٰ حکام خاموشی سے ایک تنازع سے بچنے کا طریقہ تلاش کررہے تھے اور اس کوشش میں کافی حد تک کامیاب ہوگئے تھے کہ یہ خبر میڈیاکی شہ سرخی نہ بنے۔

(جاری ہے)

اپنے غصے کیلئے مشہور سٹیو رکسن نے گراﺅنڈ آنے سے انکار کردیا تھا۔ ذرائع نے بتایا کہ لیڈز میں جب پاکستانی ٹیم پریکٹس سیشن کےلئے ہیڈنگلے پہنچی تو ٹیم کے ساتھ مکی آرتھر کے دست راست اور فیلڈنگ کوچ سٹیو رکسن موجود نہیں تھے۔ آسٹریلیا کے سابق ٹیسٹ وکٹ کیپر جو پہلے سے کئی معاملات پر ناراض تھے۔ تنخواہ کی ادائیگی میں ہونےوالی تاخیر سے مزید ناراض ہوگئے اور ٹیم کے ساتھ پریکٹس سیشن میں شرکت کےلئے گراﺅنڈ آنے سے انکار کرکے سب کو حیران کردیا تھا۔

سٹیو رکسن بھی دو سال قبل مکی آرتھر کے ساتھ پاکستان ٹیم کے کوچنگ سٹاف میں شامل ہوئے تھے۔ انہوں نے پیسوں کی خاطر اہم ترین ٹیسٹ کی تیاریوں کو نظر انداز کردیا۔ بظاہر پاکستانی کرکٹرز اپنی تیاریوں میں مصروف تھے لیکن مکی آرتھر اور منیجر طلعت علی ملک ، سٹیو رکسن کے انوکھے احتجاج پر پاکستان کرکٹ بورڈ حکام سے بات چیت میں مصروف تھے۔ پاکستان کرکٹ بورڈ کے اعلیٰ حکام کی یقین دہانی کے بعد سٹیو رکس ایک دن بعد مان گئے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ہر ماہ 8ہزار ڈالرز سٹیو رکسن کے آسٹریلوی اکاﺅنٹ میں ٹرانسفر ہوتی ہے اور چند دن کی تاخیر سے سٹیو رکسن نے ناراض ہوکر گراﺅنڈ آنے سے انکار کردیا۔سٹیو رکسن کے معاہدے میں پاکستان کرکٹ بورڈ توسیع چاہتا تھا انہیں دس فیصد تنخواہ میں اضافے کی یقین دہانی بھی کرادی گئی تھی جس کے بعد ان کی تنخواہ10ہزار ڈالرز ہوجاتی، لیکن جب سٹیو رکسن نے بورڈ کے حکام سے پوچھا کہ کیا وہ معاہدے میں توسیع چاہتے ہیں۔

تو وہ ناراض ہوگئے۔ اس دوران انہیں آئی پی ایل کی ایک ٹیم سے بھی پیشکش ہوئی جس دن سے یہ پیشکش سامنے آئی ہے سٹیو رکسن نے پاکستان کرکٹ بورڈ کو فیملی کا بہانہ بناکر منع کردیا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ سٹیو رکسن کو لاہور میں قیام کے دوران قومی اکیڈمی میں سلو انٹرنیٹ کی بھی شکایت رہی۔ چند ہفتے پہلے جب وہ دبئی سے لاہور پہنچے تو ایئرپورٹ پر انہیں بورڈ کا ڈرائیور لینے نہیں پہنچا وہ ٹیکسی پر قومی اکیڈمی میں پہنچے۔

وہ لاہور میں نجی رہائش بھی چاہتے تھے۔ لیڈز ٹیسٹ کے دوران وہ زیادہ تر وقت ڈریسنگ روم کے باہر الگ تھلگ دکھائی دیئے۔ ٹیسٹ کے دوسرے دن حسن علی نے چار رنز پر جوز بٹلر کا کیچ ڈراپ کیا تو انہوں نے ڈریسنگ روم میں جاکر حسن علی کی خوب خبر لی۔ انہوں نے کھلاڑیوں کی خراب فیلڈنگ پر بھی ناراضگی دکھائی۔ وہ اپنا کام بھر پور لگن کے ساتھ کرتے ہیں لیکن رویے میں ہارڈ لائنر مانے جاتے ہیں۔ سٹیو گھٹنے کی تبدیلی کے بعد پاکستان ٹیم میں آئے تھے۔ مکی آرتھر کو دو سال تک کئی اہم معاملات میں مشورے دینے میں بھی پیش پیش تھے۔